Friday , September 22 2017
Home / شہر کی خبریں / کلوز ٹیم کے فوٹوگرافر کا بیان قلمبند

کلوز ٹیم کے فوٹوگرافر کا بیان قلمبند

حیدرآباد /16 جنوری ( سیاست نیوز ) چندرائن گٹہ حملہ کیس کی سماعت کے موقع پر سنٹرل کرائم اسٹیشن سے وابستہ کلوز ٹیم ( سراغ رسانی دستہ ) کے فوٹو گرافر نے اپنا بیان قلمبند کروایا اور وکیل دفاع نے ان پر جرح کی۔ 38 سالہ افسر معین الدین ساکن لنگر حوض جو پیشہ سے فوٹو گرافر ہے نے عدالت کوبتایا کہ 30 اپریل 2011 کو اس نے سائنٹفک آفیسر مسٹر راجہ نائیک کے ہمراہ چندرائن گٹہ علاقہ کے مقام واردات پر پہنچ کرتصویر کشی کی۔اس کے ہمراہ ایک اورویڈیو گرافر شکیل الدین بھی موجود تھے ۔ معین الدین مقام واردات پردوپہر 1:30بجے پہنچے اور 3.30 بجے سہ پہر تک وہ موجود تھے۔بعد ازاں اویسی ہاسپٹل کیلئے روانہ ہوئے جہاں پر اس نے جپسی گاڑی کی تصویرلی اورجائے حادثہ پر لئے گئے تصاویر کو اس نے سائنٹفک عہدیدار راجہ نائیک کے حوالے کردیا ۔وکیل دفاع جی گرومورتی نے جرح کی جس کے دوران گواہ نے بتایا کہ جس وقت وہ مقام واردات پہنچے ‘ انہوں نے دیکھا کہ متعلقہ ڈی سی پی ، اے سی پی اور انسپکٹران موجود تھے ۔ انہوں نے مقام ورادات کی تصویر کشی کی ۔ انہوں نے بتایا کہ میڈیا کی ایک گاڑی بھی پائی گئی اور اس نے دستیاب قصائی کی چاقو ، خنجر ، تلوار ، پستول ،ریوالوراور کرکٹ بیاٹ کی تصویریں لی ۔ گواہ نے بتایا کہ اس کے دفتر میں ایک رجسٹر موجود ہوتا ہے جس میںتصاویرکی تمام تفصیلات درج کی جاتی ہیں۔

TOPPOPULARRECENT