Monday , August 21 2017
Home / ہندوستان / کلکتہ کی بریانی انسانی زندگی کیلئے نقصان دہ

کلکتہ کی بریانی انسانی زندگی کیلئے نقصان دہ

کلکتہ، 15جون(سیاست ڈاٹ کام )کیاکلکتہ کی بریانی انسانی زندگی کیلئے خطرناک ہوسکتی ہے ؟کلکتہ کارپوریشن کے تازہ ترین رپورٹ کے مطابق شہر میں سڑکوں پر فروخت ہونے والی بیشتر بریانی کی جانچ کے مطابق بریانی استعمال ہونے والے کلر میں کیمیکل انسانی زندگی کو نقصان پہچانے والے ہیں اور اس کی وجہ سے گردہ، دل اور کینسر ہونے کا خطرہ ہے ۔کلکتہ کارپوریشن میں میئر ان کونسل (صحت)اتین گھوش نے نے کہا کہ ہم نے بریانی کے کچھ نمونے میں مصنوعی اور نقصان دہ کیمیکل والے کلر بریانی میں پائے گئے ہیں اور اس مقدار بھی بہت زیادہ ہے ۔انہوں نے کہا کہ ہم نے ریاستی فو ڈ کمیشن سے اجازت حاصل کرلی ہے اور اس لیے بریانی میں منصوعی اور نقصان دہ کیمیکل استعمال کرنے والے ریستورنٹ اور دوکانوں کے خلاف کارروائی کی جائے گا اور ہم نے محکمہ قانون سے بھی رابطہ کیا ہے تاکہ قانونی چارہ جوئی کی جائے ۔بریانی کے نمونے کی جانچ میں معلوم ہوا ہے کہ بریانی میں استعمال ہونے والے کلروں میں میتلک ڈائی کا استعمال کیا جائے ہے جو چاول کو رنگین کردیتا ہے ۔جب کہ بریانی میں عام طور پر زعفرانی کلر کا استعمال کیا گیا ہے ۔گھوش نے کہا کہ روڈ کے کنارے فروخت کرنے والوں میں بیشتر میتلک کلر کا استعمال کرتے ہیں ۔فوڈ تکنالوجی کے ماہر اتپال پے چودھری نے بتایا کہ میتلک پیلا کلر کو کھانے میں ا ستعمال کرنے کی اجازت نہیں ہے یہ کلر انتہائی کم قیمت میں ملک بھر میں موجود ہے ۔ یہ خطرناک کیمیکل ہے جو گردہ اور دل کو بری طرح سے متاثر کرتا ہے ۔رائے چودھری نے کہا کہ اس کلر کے استعما ل کرنے کی وجہ سے نہ صرف گردہ اور دل کے متاثر ہونے کا خطر ہ ہے بلکہ اس کی وجہ سے کینسر بھی ہونے کا خطرہ ہے ۔حال ہی میں کلکتہ میں بریڈ، پاؤ روٹی اور پزا جیسی اشیاء میں خطرناک کیمیکل کے استعمال کرنے کی خبر ملنے کے بعد کلکتہ کارپوریشن نے ان کے نمونے کی جانچ کی ہدایت دی ہے ۔وہیں بیکری ایسوسی ایشن نے کل کلکتہ پریس کلب میں پریس کانفرنس میں یہ دعویٰ کیا تھا کہ بریڈ اورپاؤ میں کوئی بھی زہریلی کیمیکل کا استعمال نہیں کیا جاتا ہے اور انہیں کارپوریشن سے کلین چٹ بھی مل گئی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT