Saturday , June 24 2017
Home / جرائم و حادثات / کمسنی کی شادیوں کے خلاف پولیس کارروائی

کمسنی کی شادیوں کے خلاف پولیس کارروائی

کمشنر پولیس رچہ کونڈہ مسٹر مہیش بھاگوت نے 3 کمسن بچیوں کی شادی روک دی
حیدرآباد /14 اپریل ( سیاست نیوز ) رچہ کونڈہ پولیس کی شی ٹیم نے پھر ایک مرتبہ کم عمر لڑکیوں کی شادی کے خلاف کارروائی کرتے ہوئے تین کمسن بچیوں کی شادیوں کو روک دیا گیا ۔ کمشنر پولیس رچہ کونڈہ مسٹر مہیش بھاگوت نے بتایا کہ شی ٹیموں کو کمسن بچیوں کی شادیوں کی روک تھام کیلئے خصوصی ہدایت دی گئی تھی ۔ جس کے نتیجہ میں 11 اپریل کو بھونگیر کستوربا گاندھی گرلز ہائی اسکول ترکاپلی کے ایک طالبہ جس کی عمر 16 سال ہے کے شادی کیلئے زبردستی کی جارہی تھی اور والدین نے شادی کے رقعہ بھی چھپوائے تھے ۔ شی ٹیم نے بروقت کارروائی کرتے ہوئے کمسن بچی کی شادی کو روک دی ۔ اسی طرح ولی کونڈہ ولیج میں 16 سالہ کمسن بچی کی شادی 22 سالہ لڑکے سے کی جارہی تھی جس کے نتیجہ میں چوٹ اپل پولیس کی شی ٹیم نے بروقت کارروائی کرتے ہوئے اس شادی کو روک دی اور والدین کو اکزیکیٹیو میجسٹریٹ کے اجلاس پر پیش کرتے ہوئے انہیں پابند مچلکہ کیا ۔ اور یہ واقعہ میں سنکھیشالہ ولیج ولی کونڈہ 16 سالہ کمسن لڑکی کی شادی اس کے رشتہ دار جس کی عمر 23 سالہ بتائی جاتی ہے طئے کی گئی تھی اطلاع ملنے پر شی ٹیم نے اسے ناکام بنا دیا ۔ مسٹر بھاگوت نے بتایا کہ کم عمر لڑکیوں کی شادی کرنا جرم ہے اور یہ شادیاں کروانے والے پنڈت پجاریوں ، کارڈ پرنٹرس اور دیگر کو یہ انتباہ دیا ۔ انہوں نے بتایا کہ انسداد کم عمر لڑکیوں کی شادی کا ایکٹ ۔2006 کے تحت پولیس کارروائی کرے گی اور قصوروار پائے جانے پر 2 سال کی سزا اور ایک لاکھ جرمانہ بھی کیا جاسکتا ہے ۔ انہوں نے عوام سے اپیل کی ہے کہ کسی بھی کمسن بچی کی شادی کی اطلاع پر رچہ کونڈہ پولیس کے واٹس اپ نمبر 9490617111 پر دی جاسکتی ہے ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT