Wednesday , August 23 2017
Home / شہر کی خبریں / کمسن سائنسداں و مصور زین احمد ، بیونک ہاتھ کی تیاری میں مصروف

کمسن سائنسداں و مصور زین احمد ، بیونک ہاتھ کی تیاری میں مصروف

حیدرآبادی طالب علم کو سعودی عرب میں سن ٹاپ اسٹار آف دی ائیر ایوارڈ
حیدرآباد ۔ 25 ۔ اگست : ( محمد ریاض احمد ) : نونہالان ملت میں صلاحیتوں کی کوئی کمی نہیں ۔ ان میں غیر معمولی ذہانت پائی جاتی ہے ۔ آج کی نسل تو فطین ہے ۔ روایتی تعلیم سے لے کر انفارمیشن ٹکنالوجی سے بھی کماحقہ واقف ہے ۔ ایک ایسا دور بھی تھا جب کمپیوٹرس اور اس کے کمالات دیکھ کر لوگ حیرت کا اظہار کیا کرتے تھے لیکن انسانی ذہانت کے سامنے شائد کمپیوٹرس بھی حیران ہوں گے ۔ خاص طور پر نئی نسل کے لڑکے لڑکیاں کمپیوٹرس پر اس قدر حاوی ( مہارت حاصل کرچکے ہیں ) ہوگئے ہیں کہ اسکولوں کی کلاسیس اور گھروں میں بیٹھے بیٹھے وہ غیر معمولی کارنامہ انجام دے رہے ہیں ۔ انفارمیشن ٹکنالوجی نے زندگی کے ہر شعبہ میں اپنی اہمیت و افادیت کا احساس دلایا ہے ۔ تحقیق و تالیف اور ایجادات میں آئی ٹی اہم رول ادا کررہی ہے ۔ آئی ٹی کے باعث ہی ہمارے معاشرہ میں سائنسدانوں کا اضافہ ہورہا ہے ۔ آج دنیا کو ایسے سائنسدانوں کی ضرورت ہے جو اپنی ایجادات و تحقیق کے ذریعہ انسانیت کی بقاء کو یقینی بناسکیں ۔ انسانیت کی خدمت کرسکیں ۔ حال ہی میں ہماری ملاقات ملت کے ایک ہونہال طالب علم اور ابھرتے سائنسداں و مصور سے ہوئی ۔ الیاسمین انٹرنیشنل اسکول ریاض میں 10 ویں جماعت میں زیر تعلیم زین احمد صمدانی فی الوقت ایک ایسا روبوٹک بیونک ہاتھ تیار کرنے کے پراجکٹ پر کام کررہے ہیں جو فالج سے متاثرہ مرد و خواتین کے لیے ایک نعمت غیر مترقبہ ثابت ہوگا ۔ ڈی ایچ ایل گلوبل فارورڈنگ کے ایس اے کے پراجکٹ منیجر زبیر احمد اور اصفیہ کے اس قابل فخر فرزند ایسا روبوٹک بیونک ہینڈ ( ہاتھ ) تیار کرنے کے پراجکٹ پر کام کررہے ہیں جو فالج سے متاثرہ مرد و خواتین کی سوچ و فکر کے مطابق کام کریں گے اگر وہ اپنی اس ایجاد کو منظر عام پر لانے میں کامیاب ہوجاتے ہیں تو مفلوج افراد کے لیے یہ بہت بڑا کام ہوگا ۔ زین احمد صمدانی نے پہلے ہی ایسا روبوٹ تیار کرنے میں کامیابی حاصل کرلی ہے جو cubics کو چند منٹوں میں اس کے رنگوں کے لحاظ سے ان کے اپنے مقام پر بٹھا دیتا ہے ۔ اس کے علاوہ اس کمسن سائنسداں نے ایسا روبوٹک یا بیونک ہینڈ تیار کیا ہے جو دوسرے ہاتھ کی حرکت پر حرکت میں آتا ہے ۔ سیاست کے لیے انٹرویو دیتے ہوئے زین احمد صمدانی نے بتایا کہ اس کام میں انہیں اپنے والد زبیر احمد کی مدد حاصل ہے وہ ہر مرحلہ پر اپنے فرزند کی رہنمائی کرتے ہیں ۔ زین احمد جہاں ایک ابھرتے ہوئے سائنسداں ہیں وہیں غیر معمولی مصور بھی ہیں حال ہی میں انہوں نے سن ٹاپ اسٹار آف دی ائیر خطاب جیتا ہے ۔ مملکت سعودی عرب کے تمام بڑے شہروں میں یہ مقابلے منعقد ہوتے ہیں اور پھر ہر شہر میں ٹاپ کرنے والوں کو فائنل مقابلہ کے لیے جدہ طلب کیا جاتا ہے ۔ جدہ میں فاتح کا اعلان ہوتا ہے ۔ جدہ میں زین احمد کو سن ٹاپ اسٹار آف دی ائیر کا خطاب عطا کیا گیا ۔ انہیں آئی فون ، آئی پیاڈ ، پلے اسٹیشن 4 ( دو عدد ) ، ٹرافی میڈل اور سرٹیفیکٹس بطور انعامات پیش کئے گئے ۔ سن ٹاپ دراصل مشروبات کی (BINZAGR CO-RO) کی کمپنی ہے جو ہر سال ڈرائننگ یا مصوری کے مقابلوں کا اہتمام کرتی ہے ۔ زین احمد کی خوبی یہ ہے کہ وہ اسپرے پینٹنگ میں بھی مہارت رکھتے ہیں ۔ آنکھوں پر سیاہ پٹی باندھ کر بھی وہ پینٹنگ بنا دیتے ہیں ۔ ان کی ایک بہن سوہا زبیر جو 5 ویں جماعت کی طالبہ ہے سن ٹاپ پینٹنگ مقابلہ میں ٹاپ کرچکی ہیں وہ حفظ بھی کررہی ہے جب کہ ایک اور بہن فاریہ زبیر آٹھویں جماعت میں زیر تعلیم ہیں وہ بھی ایک اچھی مصور ہیں ۔ زین احمد نہ صرف ایک اچھے مصور ہیں ، کمسن سائنسداں بھی ہیں بلکہ ایک اچھے اتھلیٹ بھی ہیں ۔ انہیں اپنی جماعت کا وائس کیپٹن اسپورٹس بنایا گیا ہے ۔ فیبرکیس مقابلوں میں بھی کامیابی حاصل کرنے والے زین احمد کو ممبئی میں منعقدہ سالانہ روبوٹک مقابلوں میں حصہ لے کر بیسٹ انٹرنل روبوٹ کا ایوارڈ حاصل کرنے کا اعزاز حاصل ہے ۔ اس مقابلہ میں انہوں نے اپنے اسکول کی نمائندگی کی تھی ۔ زین کے دادا غلام جیلانی صاحب ریٹائرڈ میڈیکل اینڈ ہیلتھ آفیسر مانصاحب ٹینک میں مقیم ہیں ۔ اس لڑکے کو اپنے ددھیال اور ننھیال دونوں طرف سے حوصلہ افزائی حاصل رہی ہے ۔ زین چاہتے ہیں کہ وہ ایسا بیونک ہاتھ تیار کرنے میں کامیاب ہوجائیں جسے انسان کے دماغ سے کنٹرول کیا جاسکے ۔ بہر حال امید ہے کہ یہ لڑکا اپنے عزائم و بلند ارادوں میں انشاء اللہ کامیاب ہو کر ملک و ملت کا نام روشن کرے گا ۔۔

TOPPOPULARRECENT