Sunday , October 22 2017

کمھار

چلارہا ہے چاک کُمھار
چلارہا چاک کُمھار
کھیتوں سے ہے مٹی لاتا
گوندھ گوندھ کر اسے بناتا
رکھ دیتا اسے چاک پر
چھڑی لگاکر چاک گُھماتا
چلارہا ہے چاک کمھار
چلارہا ہے چاک کمھار
ناند بناتا ‘ گھڑے بناتا
اور سپاہی کھڑے بناتا
دیئے ‘ صراحی ‘ ہاتھی گھوڑا
کچھ  چھوٹے کچھ بڑے بناتا
چلارہا ہے چاک کمھار
چلارہا ہے چاک کمھار
گھرچھانے کیلئے لگاتار
نریوں کھپڑوں کاانبار
چلارہا ہے چاک کُمھار
چلارہا ہے چاک کُمھار
کبھی دوڑ کر مٹی ڈھوتا
کبھی صاف کراسے بھگوتا
کبھی سکھاتا رہتا برتن
کبھی ’’آواں‘‘ میں رکھتا ہوتا
کرتا رہتا کام سدا وہ
نہیں کبھی رہتا بے کار
چلارہا  ہے چاک کُمھار
چلارہا ہے چاک کُمھار
انور انصاری

TOPPOPULARRECENT