Wednesday , August 16 2017
Home / ہندوستان / کمیونسٹ لیڈر پنسارے کے قتل کیس میں پیشرفت ، مشتبہ افراد گرفتار

کمیونسٹ لیڈر پنسارے کے قتل کیس میں پیشرفت ، مشتبہ افراد گرفتار

ممبئی ۔ 18 ۔ ستمبر : ( سیاست ڈاٹ کام): مہاراشٹرا پولیس نے پڑوسی ریاست کرناٹک سے مزید 2 افراد کو گرفتار کرلیا ہے جن کا قریبی تعلق سنتان سنستھا کارکن سمیر گائیکواڑ سے بتایا ہے ۔ انہیں بزرگ کمیونسٹ لیڈر اور معقولیت پسند جہدکار گویند پنسارے کے قتل کے سلسلہ میں کل گرفتار کیا گیا تھا ۔ یہ گرفتاریاں ضلع بیلگام کے علاقہ سنکھیشور میں عمل میں آئی جہاں پر سمیر گائیکواڑ نے ابتدائی تعلیم حاصل کی تھی ۔ کولھا پور کے ایک سینئیر پولیس عہدیدار نے اپنا نام مخفی رکھنے کی شرط پر بتایا کہ گرفتار ملزمین سشیل جادھو اور سریدھر جادھو کو سانگلی ) مہاراشٹرا ) لایا گیا اور گائیکواڑ کی موجودگی میں ان سے پوچھ تاچھ کی گئی ۔ انہوں نے بتایا کہ دونوں محروسین جو کہ گائیکواڑ کے ماموں ہیں ۔ پوچھ تاچھ کے بعد بھی شک کے دائرہ میں ہیں ۔ پولیس کی تحقیقاتی ٹیم نے گائیکواڑ کے کال ڈاٹا ریکارڈ کی بنیاد پر دونوں بھائیوں کو حراست میں لے لیا گیا ہے ۔ جب کہ پولیس ٹیم گائیکواڑ کے موبائیل فون کے رابطوں پر نگرانی رکھی ہوئی تھی جس میں اکثر و بیشتر کالس جادھو برادرس کو کیے گئے تھے ۔ انہوں نے بتایا کہ دونوں بھائیوں کی آواز کے نمونوں کو گجرات میں ایک لیبارٹری کو روانہ کردئیے گئے ہیں ۔ قبل ازیں پولیس نے گائیکواڑ کی والدہ شانتا اور دونوں بھائیوں سچن گائیکواڑ اور سندیپ گائیکواڑ سے پوچھ تاچھ کے بعد رہا کردیا ۔ جب کہ پولیس نے سانگلی سے گائیکواڑ کی گرفتاری کے بعد اس کا لیپ ٹاپ ، 23 موبائیل فونس اور 50 سیم کارڈس ضبط کرلیے ۔ علاوہ ازیں ممبئی میں کاٹجو مارگ سے ایک خاتون جیوتی کامبلے کو حراست میں لے کر دونوں بھائیوں کے ساتھ اس کے تعلقات کے بارے میں پوچھ تاچھ کی جارہی ہے ۔ انہوں نے مزید بتایا کہ گائیکواڑ کال ریکارڈ کی بنیاد پر مزید افراد کو حراست میں لیا جاسکتا ہے ۔ بتایا جاتا ہے کہ سمیر گائیکواڑ 1998 سے سنتان سنستھا کا سرگرم کارکن ہے ۔ پولیس نے الکٹرانک سرویسلنس کے ذریعہ فون کال ریکارڈ حاصل کر کے حراست میں لے لیا ہے ۔ اسے مغربی مہاراشٹرا کے کولہاپور ٹاون کی ایک عدالت میں پیش کرنے پر 23 ستمبر تک پولیس تحویل میں دیدیا گیا ۔

TOPPOPULARRECENT