Monday , August 21 2017
Home / ہندوستان / کم عمری کی شادیوں کو روکنے دانتوں کا ایکسرے لازمی

کم عمری کی شادیوں کو روکنے دانتوں کا ایکسرے لازمی

بنگلورو، 7جون (سیاست ڈاٹ کام ) ریاست کرناٹک میں اس بات کی شکایات کہ اجتماعی شادیوں میں شامل کئی لڑکیوں کی عمر 18برس سے کم ہوتی ہے ، ریاستی حکومت نے اس کو روکنے کے لئے انوکھا فیصلہ کیا ہے ۔ اجتماعی شادیوں کی تقاریب کا اہتمام کرنے والے منتظمین کو اب تمام دلہے اور دلہنوں کے دانتوں کا ایکسرے لازمی طور پر نکالنا ہوگا۔ امکانی جوڑوں کے ناموں کے اندراج سے پہلے ایسا کرنا پڑے گا۔ ریاستی محکمہ صحت و خاندانی بہبود نے اس سلسلہ میں سرکلر جاری کیا ہے ۔ اس نئے سرکلر کے مطابق یہ ایکسرے ریاستی حکومت کی جانب سے چلائے جانے والے اسپتالوں میں ہی لیا جانا چاہئے تاکہ اس بات کو یقینی بنایاجاسکے کہ اس میں کوئی بھی سازش نہ ہونے پائے ۔ یہ سرکلر ریاست میں بچوں کی شادیوں کو روکنے ریاستی حکومت کی جانب سے تشکیل شدہ جسٹس شیوراج پاٹل کی زیر قیادت کمیٹی کی سفارشات کی بنیاد پر جاری کیا گیا ہے ۔ افسروں کے مطابق اب تک ان شادیوں کے لئے صرف برتھ سرٹیفیکیٹ لازمی تھا۔ تاہم کمیٹی نے اس بات کو پایا کہ لڑکیوں کی عمر میں اضافہ کے لئے کئی سرٹیفکیٹس تبدیل کئے گئے اور فرضی سرٹیفیکیٹس بھی لائے گئے تاکہ ایسی شادیاں انجام دی جاسکیں۔ اس طرح کی سازشوں کو روکنے دلہنوں اور دلہوں کے ایکسرے کو لازمی بنایا گیا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT