Tuesday , August 22 2017
Home / شہر کی خبریں / کنارا بینک کے تمام اے ٹی ایم 30 نومبر تک نئے نوٹس کیلئے موزوں

کنارا بینک کے تمام اے ٹی ایم 30 نومبر تک نئے نوٹس کیلئے موزوں

ڈپازٹس کو کم کرنے کی کوشش، منیجنگ ڈائرکٹر راکیش شرما
حیدرآباد ۔ 18 ۔ نومبر : ( ایجنسیز ) : کنارا بنک کا منصوبہ ڈپازٹ شرحوں کو کم کرنے کا ہے کیوں کہ حکومت کی جانب سے 500 اور 1000 روپئے کے نوٹوں کی منسوخی کے اعلان کے بعد گذشتہ ہفتہ اس بینک میں 25000 کروڑ روپئے کی رقومات جمع کی گئیں ۔ بینک کے ایم ڈی راکیش شرما نے کہا کہ اس بینک کے تمام اے ٹی ایم کو 500 روپئے اور 2000 روپئے کے نئے کرنسی نوٹس کے لیے موزوں بنانے کے لیے 30 نومبر تک دوبارہ کیلبریٹ کیا جائے گا ۔ جب ان سے یہ سوال کیا گیا کہ اس بات کا اندیشہ ہے کہ رقم کی حد کو 4500 روپئے سے کم کر کے 2000 روپئے کرنے کا فیصلہ کیاش کی قلت کے باعث ہے ۔ اس پر آپ کا نظریہ کیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کیاش کی قلت نہیں ہے اس اقدام کا مقصد بینک اکاونٹس کھولنے کے لیے عوام کی حوصلہ افزائی کرنا ہے ۔ جہاں وہ رقم جمع اور نکال سکتے ہیں ایک ہفتہ میں 24000 روپئے ۔ ایسے کئی لوگ ہیں جو بینک اکاونٹ کے بغیر نوٹوں کی تبدیلی کے لیے آرہے ہیں اس لیے اس اقدام سے انہیں بینک اکاونٹ کھولنے کی ترغیب ہوگی ۔ اگرچیکہ رقم کی حد میں 2000 روپئے تک کمی کی گئی ہے لیکن کسانوں ، کرنٹ اکاونٹ ہولڈرس اور شادی تقاریب کے لیے بھی اس میں اضافہ کیا گیا ہے ۔ اس لیے اگر کیاش کی قلت ہوتی تو ایسا نہیں کیا جاتا تھا ۔ اس سوال پر کہ طویل قطاریں مزید طویل ہورہی ہیں ۔ کب حالات بہتر ہوں گے ۔ انہوں نے کہا کہ بینکس میں کیاش نہیں ہورہا ہے کیوں کہ اے ٹی ایم مشینوں کو 2000 روپئے اور 500 روپئے کے نوٹس کے لیے موجودہ حالات کے لحاظ سے موزوں بنانے کی ضرورت ہے اور ہمارے کیس میں صرف 200 اے ٹی ایمس کو از سر نو موزوں بنایا گیا ہے ۔ کیاش کی قلت نہیں ہے لیکن اے ٹی ایمس پر چونکہ کم قدر کے کرنسی نوٹس کا اسٹاک ہے اس کے باعث مسئلہ ہورہا ہے ۔ اور 2000 روپئے کے نوٹس بہت ہیں اس لیے 500 روپئے کے نوٹس آنے پر حالات بہتر ہوجائیں گے ۔۔

TOPPOPULARRECENT