Wednesday , August 23 2017
Home / شہر کی خبریں / کنٹراکٹ لکچررس کی خدمات کو باقاعدہ بنانے پر توجہ

کنٹراکٹ لکچررس کی خدمات کو باقاعدہ بنانے پر توجہ

اسکولوں میں 16نومبر سے ڈیجیٹل کلاسیس سے قبل تجرباتی کوشش: کڈیم سری ہری کا بیان
حیدرآباد۔10 نومبر، ( سیاست نیوز) ڈپٹی چیف منسٹر کڈیم سری ہری نے کہاکہ کنٹراکٹ لکچررس کی خدمات کو باقاعدہ بنانے کے معاملہ میں تاخیر کی صورت میں تنخواہوں میں اضافہ کیا جائے گا۔16 نومبر کو اسکولس میں ڈیجیٹل کلاس کے آغاز سے قبل 11تا14نومبر تک منتخبہ اسکولس میں تجرباتی طور پر ڈیجیٹل کلاسیس شروع کرنے کا مشورہ دیا۔ ڈپٹی چیف منسٹر کڈیم سری ہری نے آج دو علحدہ علحدہ پروگرامس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ حکومت کنٹراکٹ لکچررس کی خدمات کو باقاعدہ بنانے کے معاملہ میں عہد کی پابند ہے اور کابینہ میں بھی اس کو منظوری دی گئی ہے۔ چند وجوہات کے باعث تاخیر ہورہی ہے۔ اگر مزید تاخیر ہوتی ہے تو حکومت کنٹراکٹ لکچررس کی تنخواہوں میں اضافہ کرے گی۔ عدالتوں میں زیر دوران مقدمات سے دستبرداری پر ترقی دینے پر بھی سنجیدگی سے غور کرے گی۔ سرکاری کالجس کے وقار میں اضافہ کرنے کی ذمہ داری لکقررس پر عائد ہے۔ بدعنوانیوں پر قابو پانے کیلئے تمام تعلیمی اداروں کو آن لائن سے مربوط کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ بورڈ آف انٹرمیڈیٹ کو آن لائن سے مربوط کرنے پر کچھ حد تک بدعنوانیوں پر قابو پایا جاسکا ہے۔ دوسرے تعلیمی اداروں کو بھی آن لائن سے مربوط کرتے ہوئے بدعنوانیوں کے تناسب کو بڑی حد تک گھٹادیا جائے گا۔ کڈیم سری ہری نے کہا کہ ماضی کی تمام حکومتوں نے تعلیمی شعبہ کو نظرانداز کردیا تھا تاہم ٹی آر ایس حکومت گذشتہ دو سال میں 311کروڑ روپئے جاری کی ہے۔ 2017 کے اواخر تک تمام کالجس کی ذاتی عمارتیں تعمیر کی جائیں گی اور بنیادی سہولتیں بھی فراہم کی جائیں گی۔ انٹر کی تعلیم اور کتابیں مفت فراہم کرنے کی وجہ سے گذشتہ 2سال میں 50 ہزار طلبہ کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے۔ اسکولس میں ڈیجیٹل کلاسیس کا آغاز کرنے کیلئے ڈپٹی چیف منسٹر نے دوسرے پروگرام کے تحت سکریٹریٹ سے کلکٹرس اور ڈی او کے ساتھ ویڈیو کانفرنس کا اہتمام کیا۔ 16نومبر سے شروع ہونے والے ڈیجیٹل کلاسیس کیلئے 11تا14نومبر تک تجرباتی طور پر کلاسیس شروع کرنے کی ہدایت دی۔ تمام منتخبہ اسکولس میں کمپیوٹرس، برقی، کیبل کنکشن کے علاوہ ٹیچرس کی تربیت کے عمل کو مکمل کرنے کا مشورہ دیا۔ تمام اسکولس میں کسی بھی تکنیکی مسائل کے بغیر کلاسیس کے آغاز کو یقینی بنانے کیلئے کلکٹرس کو خصوصی دلچسپی لینے کا مشورہ دیا۔ پہلے مرحلے میں تقریباً 200 سرکاری اسکولس بالخصوص ایس سی، ایس ٹی، بی سی اور اقلیتی ریزیڈنشیل اسکولس میں ڈیجیٹل کلاسیس کا آغاز کرنے کیلئے تیار کی گئی رپورٹ انہیں پیش کرنے کے بھی احکامات جاری کئے۔

TOPPOPULARRECENT