Friday , September 22 2017
Home / ہندوستان / کنہیا کمار پر حملہ کرنے والا بی جے پی کا حامی نکلا

کنہیا کمار پر حملہ کرنے والا بی جے پی کا حامی نکلا

پونے ۔ 6 ۔ جون : ( سیاست ڈاٹ کام): مانس ڈیکا کی زیر قیادت آسام کے سیلفی نوجوانوں نے سماجی میڈیا پر اپنی تصاویر پوسٹ کرتے ہوئے صدر بی جے پی امیت شاہ کو مبارکباد پیش کی ۔ جب کہ این یو اسٹوڈنٹس لیڈر کنہیا کمار نے مانس ڈیکا پر یہ الزام عائد کیا تھا کہ ماہ اپریل میں ایک طیارہ میں سفر کے دوران ان کے ساتھ لڑائی جھگڑا کیا اور یہ مختصر جھڑپ ، حکومت مہاراشٹرا کے پرمود مہاجن اسکل اینڈ انٹرپرینو شپ مشن کنونشن سے امیت شاہ کے خطاب سے قبل ہوئی تھی ۔ تاہم آسام کے نوجوانوں نے تقریب میں شرکت کے بغیر واپس چلے گئے ۔ بعد ازاں مانس ڈیکا نے سوشیل میڈیا پر امیت شاہ کے ساتھ لی گئی تصویر ( سیلفی ) کو پوسٹ کردیا ۔ واضح رہے کہ کنہیا کمار نے 24 اپریل کو یہ الزام عائد کیا تھا کہ شہر پونے کے سافٹ ویر ادارہ میں برسر خدمت ڈیکا نے جٹ ایرویز کی فلائٹ میں سفر کے دوران حملہ کی کوشش کی تھی ۔ اگرچیکہ ممبئی پولیس نے کمار کی شکایت پر قابل ضمانت کیس درج کیا تھا ۔ لیکن پولیس نے اس الزام کو بے بنیاد قرار دیا تھا ۔ کنہیا کمار نے اس واقعہ کے بعد ڈیکا کو بی جے پی کا کٹر حامی قرار دیا تھا ۔واضح رہے کہ جواہر لال یونیورسٹی میں افضل گرو کی برسی کے موقع پر نامعلوم افراد کے قابل اعتراض نعرے لگانے پر کنہیا کمار کو مورد الزام ٹہرایا گیا ۔ سنگھ پریوار نے انہیں قوم دشمن قرار دیا تھا۔

TOPPOPULARRECENT