Saturday , August 19 2017
Home / سیاسیات / کنہیا کمار کو مفت میں شہرت کس نے دی ہے ؟

کنہیا کمار کو مفت میں شہرت کس نے دی ہے ؟

مرکزی وزیر وینکیا نائیڈو سے شیوسینا کا استفسار
ممبئی ۔ 7 ۔ مارچ : ( سیاست ڈاٹ کام ) : جواہر لعل نہرو یونیورسٹی اسٹوڈنٹس یونین کے صدر کنہیاکمار کو مفت تشہیر کا مواقع فراہم کرنے پر بی جے پی کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے حلیف جماعت شیوسینا نے آج یہ دریافت کیا کہ انہیں کس طرح مختصر مدت میں ضمانت منظور ہوگئی جب کہ غداری کے الزام میں گرفتار دیگر افراد ہنوز جیل میں مقید ہیں ۔ پارٹی ترجمان سامنا کے اداریہ میں کہا گیا ہے کہ مرکزی وزیر وینکیا نائیڈو کا کہنا ہے کہ کنہیا کمار کو مفت میں شہرت حاصل ہوئی ہے ۔ اگر ایسا ہے تو اس کے ذمہ دار کون ہیں ؟ کیوں کہ آج کل تو کوئی چیز مفت میں نہیں ملتی حتی کہ چھوٹی چھوٹی چیزوں کے لیے قیمت ادا کرنی پڑتی ہے ۔ محنت کش طبقہ اور مزدور جنہوں نے پراویڈنٹ فنڈ میں اپنی رقومات محفوظ کروائی ہیں ان کی محنت شاقہ پر بھی ٹیکس نافذ کیا جارہا ہے جس سے یہ ظاہر ہوتا ہے کہ حکومت عوام کے لیے کچھ بھی مفت دینا نہیں چاہتی ۔ شیوسینا ترجمان نے کہا کہ ہردیک پٹیل جنہوں نے گجرات میں اپنی برادری کے لیے تحفظات کے مطالبہ پر احتجاجی تحریک شروع کی تھی ۔ بغاوت کے الزامات عائد کیے جانے کے بعد ہنوز جیل میں قید ہے ۔ علاوہ ازیں کرنل پروہیت اور سادھوی پرگنہ جیسے لوگ بھی قید و بند کی سزا بھگت رہے ہیں ۔ اب سوال یہ ہے کہ کنہیا کو کس طرح بہ آسانی ضمانت حاصل ہوگئی ہے ۔ آیا انہیں حکومت کے لیے مسائل پیدا کرنے کی خاطر سلاخوں کے پیچھے ڈھکیل دیا گیا ۔ اس طرح کے متعدد سوالات کا جواب دینا ضروری ہے ۔ شیوسینا نے بتایا کہ اگر وینکیا نائیڈو یہ استدلال پیش کرتے ہے کہ کنہیا کو مفت میں شہرت حاصل ہوئی جس کے لیے ہمارے نظام اور سرکاری انتظامیہ ذمہ دار ہے ۔ اب تو اسٹوڈنٹس لیڈر ایک ہیرو بن گیا ہے ۔ کیوں کہ بعض لوگوں نے اس پر حملہ کرنے والے کو نقد انعام دینے کا اعلان کیا ہے ۔ واضح رہے کہ ایک بی جے پی لیڈر کلدیپ ورشنے نے کنہیا کی زبان کاٹ دینے پر 5 لاکھ روپئے کے انعام کا اعلان کیا ہے ۔ کیوں کہ جیل سے ضمانت پر رہائی کے بعد کنہیا نے بی جے پی اور وزیر اعظم مودی کے خلاف تنقیدیں کی تھیں ۔ علاوہ ازیں دہلی میں ایک پوسٹر آویزاں کیا گیا ۔ جس میں کنہیا کو گولی مار دینے پر 11 لاکھ روپئے کا انعام دینے کی پیشکش کی گئی ۔ شیوسینا نے کہا کہ اس طرح کی سیاست کا واحد مقصد انتخابات میں کامیابی اور حکومت تشکیل دینا ہے اور یہ انتباہ دیا کہ انتخابات سے قبل کسانوں ، مزدوروں ، محنت کشوں اور طلباء سے کئے گئے وعدوں کو فراموش کردیا گیا تو ملک میں وہ ، ’ انسانی بم ‘ بن جائیں گے اور سیاسی کھیل کے لیے نوجوانوں کا استحصال کیا جائے گا ۔۔

TOPPOPULARRECENT