Thursday , August 24 2017
Home / ہندوستان / کنہیا کی ضمانت منسوخ کرنے کی درخواست مسترد،بے بنیاد ہونے کا ادعا

کنہیا کی ضمانت منسوخ کرنے کی درخواست مسترد،بے بنیاد ہونے کا ادعا

طلبا لیڈر کے کوئی قوم مخالف تقریر کرنے کاثبوت نہیںدیا گیا ۔ دہلی ہائیکورٹ کا فیصلہ
نئی دہلی ۔ 11 اگسٹ ( سیاست ڈاٹ کام ) دہلی ہائیکورٹ نے دو خانگی افراد کی ایک درخواست کی سماعت سے انکار کردیا جس میں استدعا کی گئی تھی کہ جے این یو طلبا تنظیم کے صدر کنہیا کمار کی عبوری ضمانت منسوخ کردی جائے ۔ عدالت نے کہا کہ اس کے سامنے ایسا کوئی ثبوت نہیں پیش کیا گیا ہے کہ اسٹوڈنٹ لیڈر نے اپنی ضمانت کے بعد کوئی قوم مخالف تقریر کی ہو۔ جسٹس پی ایس تیجی نے درخواست کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ ایسی کوئی مثال بھی نہیں پیش کی جاسکی ہے کہ ملزم نے جاریہ تحقیقات میں کسی طرح کی رکاوٹ پیدا کرنے کی کوشش کی ہو ۔ عدالت نے کہا کہ ملزم کی ضمانت کو منسوخ کرنے کی درخواست دائر کرنے کا صرف تحقیقاتی عہدیدار کو اختیار حاصل ہے وہ بھی اس صورت میں کہ اسے تحقیقات کے دوران اس استدعا کے حق میں کوئی مواد دستیاب ہوا ہو ۔ عدالت نے کہا کہ تحقیقاتی عہدیدار کو یہ اختیار صرف غیر معمولی حالات میں حاصل ہے ۔ عدالت نے درخواست گذاروں کے اس ادعا کو قبول کرنے سے انکار کردیا کہ کنہیا نے ضمانت کے بعد بھی قوم مخالف تقاریر کی ہیں۔ عدالت نے کہا کہ اس کے سامنے ایسا کوئی معاملہ نہیں لایا گیا ہے جس میں یہ کہا جائے کہ اس نے قوم مخالف تقریر کی ہو یا اس کی کسی تقریر کو ‘ جو ضمانت کے بعد کی گئی ہو ‘ قوم مخالف قرار دیا جائے ۔

TOPPOPULARRECENT