Thursday , August 17 2017
Home / شہر کی خبریں / کودنڈا رام کانگریس کے جال میں پھنس گئے

کودنڈا رام کانگریس کے جال میں پھنس گئے

حکومت کے خلاف مہم پر ٹی آر ایس ایم پی سمن کی تنقید
حیدرآباد۔/10جنوری، ( سیاست نیوز) ٹی آر ایس کے رکن پارلیمنٹ بی سمن نے الزام عائد کیا کہ تلنگانہ پولٹیکل جے اے سی دراصل کانگریس پارٹی کے جال میں پھنس چکی ہے اور اس کے اشارہ پر حکومت کے خلاف مہم چلائی جارہی ہے۔ میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے سمن نے پولٹیکل جے اے سی کے صدرنشین پروفیسر کودنڈا رام پر شدید تنقید کی اور کہا کہ کانگریس اور تلگودیشم کے ایجنٹ کے طور پر کودنڈا رام آبپاشی پراجکٹس کی مخالفت کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ تلنگانہ کی جدوجہد میں کے سی آر کی قیادت میں جب طلباء ، ملازمین اور عوام نے جدوجہد کا آغاز کیا اسوقت کے سی آر نے کودنڈا رام کو جے اے سی کا صدرنشین مقرر کیا تھا۔ تلنگانہ ریاست کی تشکیل کے بعد جے اے سی کیلئے کوئی گنجائش باقی نہیں ہے لیکن اپوزیشن جماعتیں کودنڈا رام کو حکومت کے خلاف استعمال کررہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جے اے سی بجائے اس کے کہ حکومت کو ترقیاتی اور فلاحی اسکیمات کے سلسلہ میں مفید مشورے دے وہ تلنگانہ کے ساتھ ناانصافی کی راہ پر گامزن ہوچکی ہے۔ عوام اچھی طرح جانتے ہیں کہ کودنڈا رام اور ان کے ساتھی اپوزیشن کے اشارہ پر حکومت کی مخالفت کررہے ہیں۔ ہر پالیسی اور فیصلہ کی مخالفت کرنا کودنڈا رام کی عادت بن چکی ہے۔ سمن نے کہا کہ تلنگانہ راشٹرا سمیتی حقیقی معنوں میں عوام کی بھلائی انجام دے سکتی ہے اور وہی ریاست کو ترقی کی راہ پر گامزن کرنے کی اہلیت رکھتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ کی دوراندیش قیادت تلنگانہ کو ترقیافتہ ریاست میں تبدیل کرسکتی ہے۔ گذشتہ ڈھائی سال میں اپنی شاندار کارکردگی کے ذریعہ کے سی آر نہ صرف ملک میں نمبر ون چیف منسٹر کا مقام حاصل کرچکے ہیں بلکہ ریاست کی فلاحی اور ترقیاتی اسکیمات نے ملک بھر میں مقبولیت حاصل کرلی ہے۔ دیگر ریاستوں کی جانب سے تلنگانہ کی اسکیمات کے بارے میں معلومات حاصل کی جارہی ہیں۔ رکن پارلیمنٹ سمن نے الزام عائد کیا کہ کسانوں سے جھوٹی ہمدردی کا مظاہرہ کرنے والی کانگریس پارٹی نے اپنے 10 سالہ دور حکومت میں کبھی بھی کسانوں کی بھلائی کی فکر نہیں کی۔ ٹی آر ایس نے نہ صرف کسانوں کے قرضہ جات معاف کئے بلکہ انتخابی وعدہ کے مطابق 9 گھنٹے معیاری برقی کی سربراہی کو یقینی بنایا۔انہوں نے کہا کہ زرعی شعبہ کی ترقی اور کسانوں کی بھلائی صرف ٹی آر ایس سے ہی ممکن ہے۔

TOPPOPULARRECENT