Sunday , August 20 2017
Home / ہندوستان / کولکتہ طیرانگاہ کا مواصلاتی نظام اچانک غیر کارکرد پرواز کے دوران طیاروں کو درپیش خطرہ ٹل گیا

کولکتہ طیرانگاہ کا مواصلاتی نظام اچانک غیر کارکرد پرواز کے دوران طیاروں کو درپیش خطرہ ٹل گیا

کولکتہ 12 ستمبر (سیاست ڈاٹ کام) فضاؤں میں تین طیاروں کے ٹکراؤ کا خطرہ اس وقت پیدا ہوگیا تھا پائلٹس اور کولکتہ انٹرنیشنل ایرپورٹ کے درمیان ریڈیو کمیونکیشن (مواصلاتی رابطہ) گیارہ منٹ تک اچانک منقطع ہوگیا۔ نیتاجی سبھاش چندرا بوس انٹرنیشنل ایرپورٹ کے عہدیداروں نے بتایا کہ آسمان کی بلندیوں تک مواصلاتی رابطہ قائم کرنے کا نظام کل صبح 9.17 منٹ اور 9.28 منٹ کے درمیان غیر کارکرد ہوگیا تھا۔ دہلی ۔ کولکتہ گوا ایر فلائٹ پرواز کے بعد 6000 فٹ کی بلندی پر تھا جبکہ 2 جٹ ایرویز کی فلائٹس اس وقت پورٹ بلیر اور دہلی سے لینڈنگ کیلئے تیار تھیں۔ شہر کولکتہ کے آسمان پر دہلی سے آنے والی فلائٹ 8,000 فٹ اور پورٹ بلیر سے آنے والی فلائٹ 7,000 فٹ بلندی پر تھیں۔ انھوں نے بتایا کہ یہ طیارے، ایر ٹریفک کنٹرول کے راڈار کے مانیٹر پر واضح دکھائی دے رہے تھے لیکن بلندی کے درمیان فاصلہ رکھنے کیلئے پائلٹس کو ہدایت دینے میں رکاوٹ پیدا ہوگئی تھی جس کے باعث ان طیارہ کی سلامتی کو خطرہ لاحق ہوگیا۔ تاہم اے ٹی سی نے 4 منٹ بعد ایمرجنسی فریکوینسی کے ذریعہ فلائٹس سے رابطہ قائم کرلیا گیا اور پائلٹس کو ہدایت دی گئی ہے کہ اپنی اپنی بلندی پر آجائیں جبکہ ٹھیک 11 منٹ بعد رابطہ کا مکمل نظام بحال ہوگیا۔ مواصلاتی نظام میں خرابی کے نتیجہ میں کئی ایک طیاروں کی روانگی میں تاخیر ہوگئی۔ ایرپورٹ کے ریجنل ایکزیکٹیو ڈائرکٹر سدھستوا بہادری نے بتایا کہ اے ٹی سی ٹاور کی جدید کاری کے باعث کچھ دیر کے لئے کمیونکیشن چیانلس غیر کارکرد ہوگئے تھے۔

TOPPOPULARRECENT