Tuesday , September 26 2017
Home / سیاسیات / کولکتہ میونسپل کارپوریشن کے اجلاس میں ہنگامہ آرائی

کولکتہ میونسپل کارپوریشن کے اجلاس میں ہنگامہ آرائی

میئر کے چیمبر کے قریب اپوزیشن پر حملہ کا الزام
کولکتہ ۔ 16 ۔ مارچ (سیاست ڈاٹ کام) ااپوزیشن سی پی ایم ، کانگریس اور بی جے پی کونسلروں نے آج کولکتہ میونسپل کارپوریشن کے عبوری بجٹ اج لاس کو درہم برہم کردیا اور حالیہ ایک اسٹنگ آپریشن کے پیش نظر میئر سوان چٹرجی سے استعفیٰ کا مطالبہ کیا جس میں یہ دیکھا گیا کہ بعض ٹی ایم سی قائدین ایک فرضی خانگی کمپنی کو اعانت کیلئے بھاری رقم (رشوت) حاصل کر رہے ہیں ۔ صدرنشین کے ایم سی مسٹر ملا رائے  نے اپوزیشن کے اس مطالبہ کو قبول کرنے سے انکار کردیا کہ اسٹنگ آپریشن کے ویڈیو مسئلہ پر فی الفور بحث اور عبوری بحث (آمدنی اور اخراجات) پیش کرنے میئر کو باز رکھا جائے ۔ تمام اپوزیشن ارکان ہال کے باہر نکل گئے اور چٹرجی کے سرکاری چیمبر کے روبرو اکھٹا ہوئے ۔ میئر نے اندرون 5 منٹ عبوری بجٹ کا تخمینہ پیش کردیا اور چیمبر کی سمت روانگی کے دوران انہ یں مزاحمت کا سامنا کرنا پڑا ۔ دریں اثناء سی پی ایم کے دو کونسلروں نے مرتیونجنے چکرورتی اور رینکونسکر نے الزام عائد کیا گیاہے۔ ٹی ایم سی کونسلروں نے ان پر حملہ کردیا جبکہ اپوزیشن کانگریس بھی احتجاج کے دوران کاغذات کے ٹکڑے پھینکتے ہوئے دیکھے گئے ۔ انہوں نے مبینہ مارپیٹ واقعہ کے پیش نظر میئر کے چیمبر کے قریب سی سی ٹی وی کمیرہ نصب کیا گیا ہے۔ تاہم ٹی ایم سی کونسلروں نے الزام عائد کیا  کہ اپوزیشن جماعتیں شہرت حاصل کرنے کیلئے رسواء کن مہم چلا رہی ہیں لیکن وہ کامیاب نہیں ہوں گی۔

TOPPOPULARRECENT