Saturday , September 23 2017
Home / کھیل کی خبریں / کولکتہ کی 6 وکٹس سے جیت ، بنگلور کی ’تری مورتی ‘فلاپ

کولکتہ کی 6 وکٹس سے جیت ، بنگلور کی ’تری مورتی ‘فلاپ

سنیل نارائن اور کرس لِن کے جارحانہ تیور ، چنا سوامی اسٹیڈیم پر چوکوں اور چھکوں کی بارش

بنگلور۔ 7 مئی (سیاست ڈاٹ کام) سنیل نارائن اور کرس لن نے دھواں دھار بیٹنگ کے ذریعہ کولکتہ نائٹ رائیڈرس کو آئی پی ایل ٹی۔ 20 میچ میں رائیل چیلنجرس بنگلور کے خلاف 6 وکٹس سے شاندار کامیابی دلائی جس کے ساتھ ہی فاتح ٹیم پلے آف کھیل تک رسائی کی جدوجہد میں ایک اہم پیش قدمی کی ہے جبکہ شکست خوردہ ٹیم کے امکانات تقریباً ختم ہوگئے ہیں۔ نارائن اور لن کے جارحانہ تیور نے کولکتہ اننگز کے چند پہلے اووروں میں ہی اس میچ کے نتیجہ کا واضح اشارہ دے دیا تھا جب سنیل نارائن نے 15 گیندوں میں اپنی پہلی آئی پی ایل نصف سنچری اور ان کی ٹیم نے 6 اوورس میں سنچری مکمل کرلی تھی۔ رائل چیلنجرس بنگلور کے خلاف اس کے ہوم گراؤنڈ پر کھیلے گئے اس میچ میں کولکتہ نائٹ رائیڈرس کے کپتان گوتم گمبھیر نے ٹاس جیت کر میزبانوں کو پہلے بیٹنگ کرنے کی دعوت دی جس کا فائدہ اٹھاتے ہوئے ٹراویس ہیڈ (75) اور مندیپ سنگھ (52) نے تیز رفتار نصف سنچریوں کے ساتھ اپنی ٹیم کو 20 اوورس کے اختتام پر 6 وکٹس کے نقصان سے 158 رن کے ایک بہتر مسابقتی اسکور پر پہونچا دیا تھا حالانکہ کھیل کے آغاز سے پہلے ہی گیند پر کرس گیل صفر پر آؤٹ ہونے کے بعد بنگلور سے ہی ان کی ٹیم نفسیاتی دباؤ میں آگئی تھی۔بنگلور کی تری مورتی عملاً فلاپ ثابت ہوئی۔ کپتان ویراٹ کوہلی (5) اور اے بی ڈی ویلرس (10) معمولی اسکور پر آؤٹ ہوتے ہوئے اپنی ٹیم کا موقف کافی کمزور بنادیا تھا لیکن ہیڈ اور من دیپ ثابت قدمی سے کریس پر جمے رہے اور اپنی ٹیم کے اسکور میں قیمتی اضافہ کیا۔ اومیش یادو کولکتہ کے کامیاب بولر رہے جنہوں نے محض چار اوورس میں 36 رن دے کر تین اہم وکٹس لیا۔ بعدازاں کولکتہ نے پلے آف کی سمت مزید ایک قدم بڑھنے کے عزم کے ساتھ کامیابی کے ہدف کا تعاقب شروع کیا تھا۔ کرس لن نے کھیل کے آغاز سے جارحانہ تیور اختیار کیا اور بولرس کو خوب سزا دیتے ہوئے چوکوں اور چھکوں کی مارش کی اور سنیل نارائن نے اس معاملے میں کرس کو بھی پیچھے چھوڑ دیا۔ ارائن نے چوکے اور چھکوں سے کم رن بنانا شاید گوارا نہیں کیا اور محض 15 گیندوں میں اپنی پہلی آئی پی ایل نصف سنچری مکمل کرلی اور اس وقت کولکتہ کا اسکور کسی وکٹ کے نقصان کے بغیر 81 رن تک پہونچ گیا۔ اگلی گیند پر کرس لن نے چھکہ اور پھر اس کے بعد چوکا لگاتے ہوئے یوزویندر چاہل کے چھکے چھڑا دیا اور ایسا محسوس ہورہا تھا جیسے بنگلور کے چنا سوامی اسٹیڈیم پر چوکوں اور چھکوں کی بارش ہورہی ہے۔ اس درمیان کولکتہ کا اسکور 6.1 اوورس میں کسی نقصان کے بغیر 105 رن پر پہونچ گیا۔ اس  طرح چینائی سوپر کنگس کے بعد کولکتہ کولکتہ پہلے چھ اوورس میں 100 رن کا اسکور عبور کرنے والی دوسری ٹیم بن گئی جس کا جشن جاری ہی تھا کہ انکت چودھری کو پہلی کامیابی ملی جب ان کے خطرناک باؤنسر پر سنیل نارائن آؤٹ ہوگئے۔ یہ بنگلور کیلئے راحت ثابت ہوئی۔ اس درمیان کرس لن نے اپنے 50 رن مکمل کرتے ہی پون نیگی کی گیند پر آؤٹ ہوگئے اور بنگلور اس مرحلے پر کھیل میں دوبارہ واپس آتی دکھائی دے رہی تھی۔ کولکتہ کو پہلے کے دو میچوں میں شکست ہوچکی ہے اور وہ 14 پوائنٹس کے ساتھ ٹیبل پر تیسرے مقام پر ہے لیکن بنگلور صرف 5 پوائنٹس کے ساتھ آخری مقام پر ہے۔

TOPPOPULARRECENT