Friday , August 18 2017
Home / شہر کی خبریں / کونسل انتخابات : انصاف اور ناانصافی کے درمیان جنگ

کونسل انتخابات : انصاف اور ناانصافی کے درمیان جنگ

آپریشن آکرشن سے جمہوریت کو نقصان ،نلگنڈہ میں ایم پی سکھیندر ریڈی کا بیان
حیدرآباد ۔ 20 ڈسمبر (سیاست نیوز) قانون ساز کونسل انتخابات انصاف اور ناانصافی کی جنگ ہے ۔ چنڈی یگم سے چیف منسٹر کی سونچھ میں تبدیلی آنے کی توقع ہے ۔ ریاستی وزراء آپریشن آکرشن کے نام پر جمہوری نظام کو نقصان پہونچارہے ہیں ۔ ان خیالات کا اظہار رکن پارلیمنٹ نلگنڈہ مسٹر جی سکھیندر ریڈی نے آج شام اپنی رہائش گاہ پر صحافتی کانفرنس کو مخاطب کرتے ہوئے کیا ۔ انہوں نے کہا کہ چیف منسٹر چنڈی یگم کے نام پر ریاست میں پرامن فضاء کی برقراری کی کوششیں کررہے ہیں لیکن چیف منسٹر کواس یگم سے اپنی سونچ میں تبدیلی لانے کی ضرورت ہے ۔ ترقی کے نام پر سیاست کو داغدار کررہے ہیں۔ 18 ماہ کے دور میں کوئی بھی پراجکٹ کو تکمیل نہیں کیا گیا ہے کسی بھی علاقہ میں پانی کی سربراہی عمل میں نہیں لائی گئی ۔ کانگریس کے دور میں کئے گئے ترقیاتی کاموں سے کئی ایک علاقوں میں آبپاشی اور پینے کے پانی کی سربراہی عمل میں لائی گئی ۔ رکن پارلیمنٹ نے بتایا کہ ضلع میں کانگریس پارٹی کو زائد از 550 ووٹرس ہیں لیکن ریاستی وزیر برقی ترقی کے نام پر غیر جمہوری طور پر ضلع پریشد اور بلدی ارکان کو ٹی آر ایس پارٹی میں شامل ہونے کی ترغیب دے رہے ہیں ۔ ضلع پریشد کے اجلاس کو ریاستی وزیر نے پارٹی پروگرام کی طرح استعمال کرتے ہوئے اراکین کو پارٹی میں شمولیت کا لالچ دے رہے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ سیاست میں کامیابی و ناکامی ہوتی رہتی ہے لیکن غیر جمہوری طور پر دیگر پارٹیوں کو نقصان پہونچاتے ہوئے ریاستی وزراء جمہوریت کو نقصان پہونچارہے ہیں ۔ انہوں نے کونسل انتخابات میں اراکین ضلع پریشد و بلدیات کو ضمیر کی آواز پر ووٹ دینے کی خواہش کی ۔انہوں نے بتایا کہ ضلع میں ریاستی وزیر برقی اپنے محکمہ پر توجہ دینے سے زیادہ سیاسی جماعتوں کو نقصان پہونچانے کی ہرممکنہ کوششیں کررہے ہیں یہ ایک غیر جمہوری عمل ہے ۔ اس موقع پر پردیش کانگریس ایس ٹی سیل صدر مسٹر جگن لال نائیک سابقہ صدرنشین بلدیہ پی وینکٹ نارائنا گوڑ و دیگر موجود تھے۔

TOPPOPULARRECENT