Tuesday , September 26 2017
Home / Top Stories / کونسل انتخابات میں حکمرا ں ایس پی کا شاندار مظاہرہ

کونسل انتخابات میں حکمرا ں ایس پی کا شاندار مظاہرہ

35 کے منجملہ 31 نشستوں پر کامیابی، بی جے پی کو بری طرح شکست
لکھنؤ۔ 6 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) اُترپردیش میں 2017ء اسمبلی انتخابات سے قبل حکمراں سماج وادی پارٹی (ایس پی) کو آج اس وقت ایک نیا حوصلہ ملا، جب اس نے ریاستی مقننہ کونسل میں لوکل باڈیز کی 28 کے منجملہ 25 نشستوں پر کامیابی حاصل کی ۔اقتدار کی ایک بڑی دعویدار جماعت بی جے پی کو ایک نشست پر بھی کامیابی نہ مل سکی۔ مابقی 5 نشستوں میں بی ایس پی کو 2 اور کانگریس کو ایک پر کامیابی ملی جبکہ 2 نشستوں پر آزاد امیدواروں نے کامیابی حاصل کی۔ اس کامیابی کے ساتھ ہی 100 رکنی اُترپردیش مقننہ کونسل میں ایس پی کو اکثریت حاصل ہوگئی ہے۔ الیکشن کمیشن نے 35 نشستوں پر رائے دہی کیلئے 8 فروری کو اعلامیہ جاری کیا تھا۔ سماج وادی پارٹی کے 7 امیدوار بلامقابلہ منتخب قرار دیئے گئے۔ آج نتائج کے اعلان کے بعد کونسل میں پارٹی موقف اس طرح ہوگیا ہے۔ ایس پی 58، بی ایس پی 16، کانگریس2، بی جے پی 7، ٹیچرس گروپ 5، آزاد 6، آر ایل ڈی 1 اور مخلوعہ 5، سماج وادی پارٹی نے 3 مارچ کو ہوئے انتخابات میں 28 کے منجملہ 23 نشستوں پر کامیابی حاصل کی جن میں گورکھپور بھی شامل ہے جہاں پارٹی کے سرکاری امیدوار سی پی چند نے کامیابی درج کی۔ انہیں ٹکٹ دیئے جانے کے بعد اگرچہ پارٹی سے خارج کردیا گیا تھا لیکن الیکشن کمیشن نے انہیں کامیاب ایس پی امیدوار قرار دیا ہے۔ ایس پی کے قومی جنرل سیکریٹری رام گوپال یادو نے کہا کہ ریاست کے عوام ہمارے ساتھ ہیں اور ہم 2017ء اسمبلی انتخابات میں بھی کامیابی حاصل کرینگے۔ بی جے پی ترجمان وجئے بہادر پاٹھک نے کہا کہ حکمراں جماعت نے طاقت و دولت کے بل بوتے پر کامیابی حاصل کی ہے۔ وزیراعظم نریندر مودی کے وارناسی لوک سبھا حلقہ میں جیل میں بند مافیا ڈان برجیش سنگھ نے بحیثیت آزاد امیدوار، سماج وادی پارٹی امیدوار مینا سنگھ کو شکست دی جبکہ موجودہ کانگریس ایم ایل سی دنیش پرتاپ نے پارٹی صدر سونیا گاندھی کے رائے بریلی حلقہ سے کامیابی حاصل کی۔

TOPPOPULARRECENT