Thursday , September 21 2017
Home / Top Stories / کوڈنانی کے مقدمہ میں امیت شاہ کی بحیثیت گواہ طلبی

کوڈنانی کے مقدمہ میں امیت شاہ کی بحیثیت گواہ طلبی

صدر بی جے پی کے نام خصوصی عدالت کا سمن، 18 ستمبر کوحاضری کی ہدایت

احمدآباد 12 ستمبر (سیاست ڈاٹ کام) 2002 ء کے نروڈہ گام فسادات کے مقدمہ کی سماعت کرنے والی ایس آئی ٹی کی ایک خصوصی عدالت نے اس مقدمہ کی ایک کلیدی ملزم اور سابق ریاستی وزیر مایا کوڈنانی کے دفاعی گواہ کی حیثیت سے حاضری کے لئے بی جے پی کے صدر امیت شاہ کے نام آج سمن جاری کیا۔ کوڈنانی کی طرف سے دائر ایک درخواست پر خصوصی ایس آئی ٹی جج پی بی دیسائی نے امیت شاہ کو سمن جاری کرتے ہوئے 18 ستمبر کو عدالت میں حاضر رہنے کی ہدایت کی ہے۔ عدالت نے کہاکہ شاہ اگر مقررہ تاریخ پر عدالت میں حاضر نہ ہوں گے تو ان کے نام دوبارہ کوئی سمن جاری نہیں کیا جائے گا۔ کوڈنانی کے وکیل امیت پٹیل نے شہر احمدآباد کے تھالتیج علاقہ میں واقع امیت شاہ کی رہائش کا پتہ عدالت میں پیش کیا تھا۔ جس کے بعد عدالت اس پتہ پر سمن جاری کی ہے۔ قبل ازیں امیت شاہ کے نام سمن کی اجرائی کے لئے کوڈنانی ان کا پتہ دینے میں ناکام ہوگئی تھیں۔ ان کے وکیل نے پتہ داخل کرنے کے لئے دو مرتبہ چار چار دن کی مہلت طلب کی تھی۔ کوڈنانی نے اس مقدمہ میں اپنی بے قصوری ثابت کرنے کے لئے درخواست میں دعویٰ کیا ہے کہ وہ ریاستی اسمبلی کے اجلاس میں شرکت کے بعد سولا سیول ہاسپٹل گئی تھیں جہاں گودھرا میں سابرمتی ٹرین کو نذر آتش کرنے کے واقعہ میں ہلاک ’کارسیوکوں‘ کی نعشیں لائی گئی تھیں۔ کوڈنانی نے یہ دعویٰ بھی کیا تھا کہ امیت شاہ جو اُس وقت اسمبلی کے رکن تھے، اس دواخانہ میں موجود تھے۔ کوڈنانی کا کہنا ہے کہ امیت شاہ پر جرح اور ان کی گواہی اُنھیں (کوڈنانی) کو بے قصور ثابت کرسکتی ہے۔ 2002 ء کے نروڈہ گام فسادات میں 11 مسلمان ہلاک ہوگئے تھے۔ کوڈنانی اس مقدمہ کی کلیدی ملزم ہیں۔ نروڈہ پاٹیہ فسادات میں 97 افراد کی ہلاکت کے ایک مقدمہ میں پہلے ہی مجرم پائی جاچکی ہیں جس پر اُنھیں 28 سال کی سزائے قید دی گئی ہے۔

بی جے پی نے خوشامدی سیاست کو ختم کیا : امیت شاہ
کولکتہ 12 ستمبر ( سیاست ڈاٹ کام ) بی جے پی کے صدر امیت شاہ نے آج کہا کہ ان کی پارٹی نے ملک میں خوشامد کی سیاست کو ختم کرتے ہوئے کارکردگی کی سیاست متعارف کروائی ہے ۔ انہوں نے اپنے سہ روزہ دورہ کے دوسرے دن آج دانشوروں کے ساتھ ایک اجلاس میں کہا کہ نریندر مودی حکومت نے اپنے اقتدار کے تین سال کے دوران فیصلے کرنے کے سیاسی عزم کا اظہار کیا ہے جبکہ سابقہ یو پی اے دور میں پالیسی فیصلے مفلوج ہوکر رہ گئے تھے ۔ امیت شاہ نے کہا کہ تین سال میں ہندوستان تیزی سے ترقی کرتی ہوئی معیشت کے طور پر ابھر اہے اور یہ کوئی آسان کام نہیں تھا ۔ انہوں نے کہا کہ کسی بھی اپوزیشن جماعت نے مودی حکومت کے خلاف کرپشن کے الزامات عائد نہیں کئے ہیں اور حکومت نے عوام کو فائدہ پہونچانے کے فیصلے کئے ہیں۔ امیت شاہ نے کہا کہ بی جے پی کارکردگی کی سیاست میں یقین رکھتی ہے اور جو لوگ کارکردگی دکھاتے ہیں وہی باقی رہتے ہیں۔ ہم خوشامد کی سیاست یا ووٹ بینک کی سیاست میں یقین نہیں رکھتے ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT