Sunday , August 20 2017
Home / اضلاع کی خبریں / کوڑنگل کو ضلع محبوب نگر میں برقراری تک جدوجہد

کوڑنگل کو ضلع محبوب نگر میں برقراری تک جدوجہد

اپوزیشن کا زبردست احتجاج، ٹریفک نظام درہم برہم،ضلع کلکٹر کو یادداشت

کوڑنگل۔/9اکٹوبر، ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) ریاست تلنگانہ میں اضلاع کی تنظیم جدید کے تحت حلقہ اسمبلی کوڑنگل کو دو حصو ں میں تقسیم کرتے ہوئے تین منڈلوں کوسگی، مدور اور دولت آباد کو حسب سابق محبوب نگر ضلع میں اور دو منڈلوں کو ڑنگل و بمرس پیٹ کو مجوزہ ضلع وقارآباد میں ضم کرنے کے خلاف زبردست صدائے احتجاج بلند کرتے ہوئے تمام حزب مخالف پارٹیوں کانگریس، ٹی آر ایس، ٹی ڈی پی، بی جے پی ، سی پی آئی اور سی پی ایم قائدین و عوام الناس کے جم غفیر نے حسب سابق کوڑنگل کو ضلع محبوب نگر میں ہی برقرار رکھنے کا پرزور مطالبہ کرتے ہوئے گزشتہ روز بس اسٹانڈ کے دامن میں واقع بین ریاستی امبیڈکر چوراہے پر دھرنا دیتے ہوئے چاروں جانب راستہ روکو پروگرام منظم کئے جس سے چاروں جانب بارہ بجے دن تا چار بجے شام ٹریفک نظام درہم برہم ہوکر رہ گیا۔ چاروں جانب تین تین کلو میٹر تک موٹر گاڑیوں کی قطاریں دیکھی گئیں۔ بیشتر قائدین نے مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ ضلع بھر میں پسماندہ مقام کوڑنگل کو ضلع وقارآباد سے ملحق کرنا مزید پسماندہ کرنے کے مترادف ہوگا۔ اس اقدام کو سیاسی مقصد براری قرار دیاگیا۔ عوام کی سہولیات کو ملحوظ رکھتے ہوئے اقدامات کئے جانے چاہیئے۔ کوڑنگل سے محبوب نگر صرف ایک گھنٹہ کی مسافت ہے جبکہ مجوزہ ضلع وقارآباد پہنچنے کے لئے دو گھنٹے درکار ہوتے ہیں۔ یاد رہے کہ کوڑنگل ایک عرصہ دراز سے نمایاں تاریخی مقام رہا ہے۔ محبوب علی بادشاہ کے زمانہ میں یہ مقام نظام نگر کے نام سے موسوم تھا جو موتی، اونی اور ریشمی کپڑے کی صنعت کے لئے مشہور تھا جس میں منصفی، دفتر تحصیل، سرکاری دواخانہ اور کچہری تھی۔ 1292 ف مطابق 1882 میں اس کو تعلقہ قرار دے کر ضلع گلبرگہ کے تحت کردیا گیا۔ اور اس کا دفتری نام کوڑنگل قرار پایا۔ نظام دور حکومت میں کوڑنگل خالصہ کا علاقہ تھا جس کے تحت 124مواضعات خالصہ تھے جس کا ضلع گلبرگہ تھا۔ تقسیم ریاست حیدرآباد کے بعد 1956 میں ضلع محبوب نگر سے ملحق کیا گیا۔ بعد ازاں ضلع کلکٹر کو یادداشت بھجوائی گئی۔ اس پروگرام میں مسرز بسواراج، مدپا، مدھوسدن یادو، کرشنم راجو، این پرشانت، محمد مشتاق، شیام سندر، کرنٹ راملو، چندرپا، کشٹیا، بھوانپا، سوما شیکھر، ہنمنت ریڈی، رمیش بابو سابق سرپنچ، امتیاز احمد اور ایرن پلی سرینواس وغیرہ نے حصہ لیا۔

TOPPOPULARRECENT