Saturday , September 23 2017
Home / شہر کی خبریں / کچرا نکاسی کیلئے فراہم کردہ آٹوز سے روزگار محرومی کے الزامات مسترد

کچرا نکاسی کیلئے فراہم کردہ آٹوز سے روزگار محرومی کے الزامات مسترد

کمشنر بلدیہ سے مزدوروں کی ملاقات، مؤثر اقدامات پر عمل کا تیقن
حیدرآباد 13 جنوری (سیاست نیوز) شہر میں صفائی اور کچرے کی نکاسی کیلئے فراہم کردہ آٹوز سے روزگار متاثر ہونے کے الزامات کو بلدیہ نے مسترد کردیا ہے اور کمشنر جی ایچ ایم سی مسٹر جناردھن ریڈی نے کہاکہ کچرے کی نکاسی والے سوچھ آٹوز سے صفائی عملہ کا روزگار متاثر نہیں ہوگا۔ بلکہ بلدیہ اس عملہ کو آٹوز پر ہلپر کی طرح موقع فراہم کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ اپنے جاری کردہ بیان میں کمشنر بلدیہ نے بتایا کہ روزگار کو متاثر ہونے نہیں دیا جائے گا۔ بتایا جاتا ہے کہ کچرے کی نکاسی کرنے والے رکشاؤں کے مزدوروں کی بڑی تعداد نے آج کمشنر بلدیہ سے ملاقات کی اور روزگار متاثر ہونے کا خطرہ ظاہر کیا۔ کمشنر بلدیہ ان افراد کو یقین دلایا کہ وہ مؤثر اقدامات کرتے ہوئے روزگار کے تحفظ کو یقینی بنائیں گے۔ انھوں نے بتایا کہ شہر میں 20 لاکھ سے زائد مکانات پائے جاتے ہیں اور سوچھ آٹو کے ذریعہ صرف 10 لاکھ مکانات کا احاطہ کیا جارہا ہے جبکہ باقی 10 لاکھ مکانات سے کچرے کی نکاسی پرانے طریقے کے آٹو رکشاؤں کے ذریعہ ہی عمل میں لائی جائے گی۔ انھوں نے بتایا کہ ڈرائیونگ لائسنس رکھنے والے رکشا ورکروں کو آٹو کی فراہمی میں اہمیت دی جائے گی اور رکشا مزدوروں کو جو دوسرے شعبوں میں کام کرنے کی خواہش رکھتے ہوں انھیں تربیت دی جائے گی۔ کمشنر بلدیہ نے بتایا کہ بلدیہ کے اربن کمیونٹی ڈیولپمنٹ شعبہ کی جانب سے رکشا مزدوروں کی نشاندہی کی جائے گی اور ان کی بہبود کے لئے اقدامات کئے جائیں گے۔

TOPPOPULARRECENT