Sunday , September 24 2017
Home / اضلاع کی خبریں / کڑپہ میں حج تربیتی کیمپ کا انعقاد

کڑپہ میں حج تربیتی کیمپ کا انعقاد

مفتی عبدالجبار ندوی ، مفتی محمد مصطفی عبدالقدوس ندوی اور دیگر علماء کا خطاب
کڑپہ۔ 25 اگست (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) شہر کڑپہ کے مشہور دینی ادارہ جامعۃ الصالحات کڑپہ میں بتاریخ 24/8/2015عازمین حج کیلئے ایک تربیتی حج کیمپ منعقد کیا گیا،جلسہ کا آغاز شعبۂ حفظ کی ایک طالبہ ’’عشرت بنت عبد الکریم ‘‘کی تلاوت سے ہوا،بارگار رسالت مآبؐ  میں نذرانۂ عقیدت حفظ کی ہی ایک طالبہ’’یاسمین‘‘ نے پیش کیا،جلسہ کے نظامت کے فرائض مفتی عبد الجبار ندوی قاضی شریعت دار القضاء کڑپہ نے انجام دی،جناب شیخ اسحاق علی صاحب بانی جامعۃ الصالحات نے مقاصد حج پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ حج اللہ کی محبت اور عشق کا مظہر ہے،حضرت ابراہیم ؑ کی قربانیوں کی یاد ہے،لہذا حجاج کرام کو چاہئے کہ وہ اپنی زندگی  اللہ کی مرضی اور حضور کی  پیروی میں گزاریں۔مفتی عبد الودود ندوی نے حاجیوں کی خدمت میں نعت نبی ؐپیش کیا،جس میں انہوں نے حضورؐکی بعثت کے پہلے سے لے کربعثت کے بعد تک کی بہترین انداز میں منظر کشی کی ۔اسی طرح کڑپہ اسلامک ویلفیر سوسائٹی کے صدر مولانا اکبر علی رشادی نے اپنے تجربات کی روشنی میںحج کے ایسے مسائل کی طرف اشارہ کیا جو اس وقت درپیش ہیں، انہوں نے ہر قسم کی ریا کاری ، شہرت، بدعات و خرافات سے اجتناب کرنے کی تلقین کی اور انہوںنے کہا کہ حاجی حج پہ جانے سے پہلے اور آنے کے بعد بھی اسلامی زندگی گزارے۔ اخیر میں ناظم جامعہ مفتی محمد مصطفی عبد القدوس ندوی  نے حج کے بعض اہم مسائل خاص طور پر جنایات حج اوراس کے وجوہات پر تفصیل کیساتھ روشنی ڈالی اور دوران بیان فرمایاکہ جو حجاج راست مکہ کا ارادہ کریں تو وہ اپنے ایئر پورٹ پر ہی احرام باندھ لیں،کیوں کہ جدہ سے پہلے میقات(یلملم) آجاتا ہے،جہاں بغیر احرام کے گزرنے پر ایک بکرا کی قربانی لازم ہوگی جو حرم میں دینی ہوگی،جو لوگ سیدھا مکہ کا ارادہ نہ رکھتے ہوںبلکہ جدہ میں کسی رشتہ دار کے پاس قیام کا ارادہ ہو مثلا،مدینہ منورہ کی زیارت کا ارادہ ہوتو وہ وہاں پہونچ کر مدینہ سے مکہ آتے وقت ذوالحلیفہ سے احرام باندھیں گے،اورجدہ میں رشتہ دار کے پاس قیام کرنے والے جدہ سے مکہ جاتے ہوئے رحل نما گیٹ سے پہلے احرام باندھ لیں گے۔نیز انہوں نے کہا:احرام اور حرم کے احترام میں بعض چیزوں کا ارتکاب حاجیوں کیلئے ممنوع ہے، جیسے احرام کی حالت میں خوشبو لگانا،خوشبودار صابن کا استعمال کرنا،خوشبو دار جوس پیناممنوع و مکروہ ہیں،وہاں حرم کے احترام میں شکار کرنا ،درخت وگھاس اکھاڑنا وغیرہ ممنوع ہے۔ کلمات تشکر خواجہ محی الدین(شبیر NGO)نے پیش کیا۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT