Wednesday , August 23 2017
Home / کھیل کی خبریں / کھلاڑیوں کو سبق دینے محمد عامر کی مثال رشوت و بدعنوانی ناقابل برداشت : سرفلا نگان

کھلاڑیوں کو سبق دینے محمد عامر کی مثال رشوت و بدعنوانی ناقابل برداشت : سرفلا نگان

ممبئی۔ 6 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) بین الاقوامی کرکٹ کونسل (آئی سی سی) کی انسدادِ رشوت ستانی یونٹ (اے سی یو) نے اسپاٹ فکسنگ کے ایک داغدار پاکستانی بولر محمد عامر کی طرف سے بنائے گئے ایک ویڈیو کو بدعنوانیوں میں ملوث ہونے کے نتائج کا دیگر کھلاڑیوں کو سبق دینے کیلئے استعمال کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ اے سی یو کے چیرمین رونی فلانگان نے آج یہاں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ’’ہم ایک ابتدائی مرحلے سے محمد عامر (واقعہ) کا استعمال کررہے ہیں۔ انہوں (عامر) نے (اسپاٹ فکسنگ کیلئے) اپنا جرم قبول کرنے سے قبل ایک ویڈیو بنایا تھا جس میں انہوں نے اس کے خود ان پر مرتب ہونے والے اثرات اور اپنی غلطی کی تفصیلات بیان کی تھیں‘‘۔ فلانگان نے کہا کہ آئی سی سی ورلڈ ٹی۔20 دو دن بعد اس ملک میں شروع ہورہا ہے جس میں رشوت اور بدعنوانیوں کو روکنے کیلئے اس ادارہ کی طرف سے کئی اقدامات کئے گئے ہیں۔ محمد عامر کو اسپاٹ فکسنگ میں ان کے رول پر تین ماہ کی قید بھی ہوئی تھی۔ بعدازاں انہیں پاکستانی ٹیم میں دوبارہ شمولیت کے ساتھ اپنا مسدود کرکٹ کیریئر بحال کرنے کا موقع دیا گیا تھا۔ واضح رہے کہ 2010ء کے دوران انگلینڈ کے خلاف لارڈ میں کھیلے گئے ایک ٹسٹ میچ میں پاکستانی بولر محمد عامر دانستہ طور پر ’’نو بالس‘‘ ڈالنے کے مرتکب پائے گئے تھے۔ عامر کو جن کی عمر اب 23 سال سے ان کے دیگر دو ساتھیوں سلمان بٹ اور محمد آصف کے ساتھ سزا ہوئی تھی اور انہیں (عامر) کو 4 سال قبل برطانوی جیل سے رہا کیا گیا تھا۔ سرفلانگان نے خبردار کیا کہ رشوت ستانی اور بدعنوانی کی کسی بھی سرگرمی کو کسی صورت میں برداشت نہیں کیا جائے گا لیکن اس کا مطلب ہرگز یہ نہیں ہے کہ ہر غلطی کی ایک ہی سزا ہوگی۔ اس ضمن میں میں فوجداری قانون کی اصطلاح استعمال کروں گا کہ حملہ، قتل سے مختلف ہوتا ہے‘‘۔

TOPPOPULARRECENT