Sunday , August 20 2017
Home / شہر کی خبریں / کھمم اور ورنگل میں ٹی آر ایس کا انتخابی حربہ

کھمم اور ورنگل میں ٹی آر ایس کا انتخابی حربہ

ووٹنگ مشینوں میں چھیڑ چھاڑ ، پی گوردھن ریڈی کانگریس رکن راجیہ سبھا کا بیان
حیدرآباد ۔ 15 ۔ فروری : ( سیاست نیوز) : کانگریس کے رکن راجیہ سبھا مسٹر پی گوردھن ریڈی نے کہا کہ جس طرح جی ایچ ایم سی کے انتخابات میں الکٹرانک ووٹنگ مشینوں کے ساتھ چھیڑ چھاڑ کرتے ہوئے کامیابی حاصل کرنے والی ٹی آر ایس کھمم اور ورنگل میونسپل کارپوریشن کے انتخابات میں بھی یہی حربہ استعمال کرنے کی کوشش کی ۔ پرانہیتا چیوڑلہ پراجکٹ کے ڈیزائن میں تبدیلی کرتے ہوئے کروڑہا روپئے کا غبن کرنے کا الزام عائد کیا ۔ آج اسمبلی کے احاطے میں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے مسٹر پی گوردھن ریڈی نے کہا کہ حکمران ٹی آر ایس عوامی اعتماد سے محروم ہے ۔ آزادانہ و منصفانہ انتخابات کرانے پر شکست سے دوچار ہوجانے کے خوف سے تلنگانہ حکومت نے الکٹرانک ووٹنگ مشینوں میں چھیڑ چھاڑ کی ہے اور بڑے پیمانے پر انتخابی دھاندلیاں کرتے ہوئے کامیابی حاصل کی ہے ۔ یہی سیاسی حربہ ورنگل اور کھمم کے میونسپل انتخابات میں استعمال کرنے کی کوشش کررہی ہے ۔ بھلے ہی ٹی آر ایس انتخابات میں کامیاب ہورہی ہے مگر عوام کے اعتماد سے محروم ہورہی ہے ۔ ٹی آر ایس حکومت کی 20 ماہی کارکردگی مایوس کن ہے ۔ انتخابی منشور کے ایک بھی وعدے کو پورا نہ کرنے والی ٹی آر ایس حکومت بلند بانگ دعوے کرتے ہوئے تلنگانہ کے عوام کو ہتھیلی میں جنت دکھا رہی ہے ۔ مسٹر پی گوردھن ریڈی نے چیوڑلہ پرانہیتا پراجکٹ کا ڈیزائن تبدیل کرنے کی سخت مذمت کرتے ہوئے کہا کہ حکومت ڈیزائن تبدیل کرتے ہوئے کروڑہا روپئے کا غبن کررہی ہے ۔ کانگریس کے دور حکومت میں شروع کردہ آبپاشی پراجکٹس صرف لاکھوں روپئے خرچ کرنے پر تکمیل ہوسکتے ہیں تاہم تاخیر کرتے ہوئے اس پر کروڑہا روپئے خرچ کیا جارہا ہے ۔ پراجکٹس کے تعمیری کاموں میں تاخیر کرنے والے کنٹراکٹرس کے خلاف سخت کارروائی کرتے ہوئے انہیں بلیک لسٹ کرنے کے بجائے حکومت انہیں شاباشی دیتے ہوئے انعام و اکرام سے نوازتے ہوئے سرکاری خزانے پر مالی بوجھ عائد کررہی ہے ۔ جس کی کانگریس پارٹی سخت مذمت کرتی ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT