Friday , August 18 2017
Home / ہندوستان / کھودا پہاڑ … نکلا چوہا …! نوٹ بندی کے بعد 11.23 کروڑ کی جعلی کرنسی دستیاب

کھودا پہاڑ … نکلا چوہا …! نوٹ بندی کے بعد 11.23 کروڑ کی جعلی کرنسی دستیاب

نئی دہلی ، 19 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) وزیر فینانس ارون جیٹلی نے کہا ہے کہ نوٹ بندی کے بعد سے جملہ 11.23 کروڑ روپئے کی جعلی کرنسی کا پتہ چلاہے۔ انھوں نے گزشتہ روز راجیہ سبھا کو تحریری جواب میں بتایا کہ نیشنل کرائم ریکارڈز بیورو (این سی آر بی) کے پاس دستیاب ڈاٹا سے معلوم ہوتا ہے کہ نوٹ بندی کے بعد سے 29 ریاستوں میں 14 جولائی تک جعلی کرنسی کے 1.58 لاکھ نوٹوں کا پتہ چلا جن کی ظاہری قدر 11.23 کروڑ روپئے ہے۔ نوٹ بندی کے تحت جن دو بڑی قدر والی نوٹوں (500 روپئے، 1000 روپئے) کو چلن سے ہٹا لیا گیا ، وہ 15.44 لاکھ کروڑ روپئے کی قدر رکھتی تھیں۔ اس طرح مہینوں سے عوام کیلئے جاری معاشی بھونچال کے بعد یہ عقدہ کھلا کہ ہندوستان کی لاکھوں کروڑ روپئے کی زیرگشت کرنسی میں کہیں 11.23 کروڑ روپئے کی جعلی نوٹیں بھی چل رہی تھیں جن کا پتہ چلانے کیلئے حکومت نے نوٹ بندی جیسی زبردست اُتھل پتھل کرنا مناسب سمجھا! ریزرو بینک آف انڈیا (آر بی آئی) نے ایک موبائل ایپ شروع کیا ہے جو استعمال کنندگان کو مہاتما گاندھی (نئی) سیریز کے 500 روپئے اور 2,000 روپئے کے نوٹوں کی خصوصیات دیکھنے کی سہولت فراہم کرتا ہے تاکہ اُن کے اصلی ہونے کی جانچ کی جاسکے۔ یہ ایپ اینڈرائیڈ؍ آئی فون میں ترتیب وار پلے اسٹور؍ ایپ اسٹور سے ڈاؤن لوڈ کیا جاسکتا ہے۔ وزیر موصوف نے یہ بھی کہا کہ بینک نوٹوں پر کچھ تحریر کردیں تو ان کو خراب نوٹس سمجھا جاتا ہے اور ان کو بینک اکاؤنٹس میں جمع یا کسی بینک برانچ میں تبدیل کیا جاسکتا ہے۔

TOPPOPULARRECENT