Monday , September 25 2017
Home / سیاسیات / کھڑسے کے استعفی کے بعد مہاراشٹرا بی جے پی وزرا کے اجلاس کی طلبی

کھڑسے کے استعفی کے بعد مہاراشٹرا بی جے پی وزرا کے اجلاس کی طلبی

ساتھی علیحدگی سے دوسرے وزرا تناؤ کا شکار ۔ کھڑسے کے خلاف سی بی آئی تحقیقات کی درخواست پر سماعت ملتوی
ممبئی 6 جون ( سیاست ڈاٹ کام ) چیف منسٹر مہاراشٹرا دیویندر فرنویس نے بی جے پی وزرا کا اجلاس طلب کیا جس میں انہوں نے سینئر وزیر ایکناتھ کھڑسے کی کرپشن کے الزامات پر علیحدگی کے بعد حکمت عملی کا جائزہ لیا جائیگا ۔ یہ اجلاس ایک یا دو دن میں سہیادری اسٹیٹ گیسٹ ہاوز میں منعقد ہوگا جس میں امکان ہے کہ کابینہ میں توسیع کے تعلق سے بھی تبادلہ خیال کیا جائیگا۔ ذرائع کے بموجب کھڑسے کے استعفی کی وجہ سے بی جے پی وزرا تناؤ کا شکار ہیں جو کابینہ میںسینئر وزیر تھے اور مالیہ کا قلمدان رکھتے تھے ۔ ایک سینئر وزیر نے کہا کہ پیر عموما ایسا دن ہوتا ہے جب بیشتر وزرا منترالیہ آتے ہیں اور عوام سے ملاقات کرتے ہیں تاہم کھڑسے کے استعفی اور اس مسئلہ پر انہیں خاموش رہنے کی ہدایت کے پیش نظر ایک بھی وزیر نے ریاستی سیکریٹریٹ کا دورہ نہیں کیا ۔ انہوں نے کہا کہ کھڑسے کے استعفی کے بعد کا وقفہ پارٹی کیلئے ایک چیلنج ہے ۔ وزیر موصوف نے کہا کہ موجودہ صورتحال میں چیف منسٹر نے تمام وزرا کا ایک اجلاس طلب کیا ہے جس میں کابینہ میں توسیع پر بھی تبادلہ خیال کیا جائیگا ۔ انہوں نے مزید کہا کہ جو قلمدان کھڑسے رکھتے تھے ان کی دوبارہ تقسیم کا بھی امکان ہے اور مہاراشٹرا اسمبلی کے مجوزہ اجلاس کیلئے حکمت عملی پر بھی غور کیا جائیگا ۔ اس دوران بمبئی ہائیکورٹ نے گجرات سے تعلق رکھنے والے ایک شخص کی درخواست پر سماعت 14 جون تک ملتوی کردی ہے جس نے استدعا کی تھی کہ سابق وزیر مہاراشٹرا ایکناتھ کھڑسے کے خلاف سی بی آئی تحقیقات کی جانی چاہئیں۔ اس کا الزام ہے کہ کھڑسے اور انڈر ورلڈ ڈان داود ابراہیم کے مابین فون پر بات چیت ہوئی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT