Saturday , October 21 2017
Home / Top Stories / کھڑسے کے خلاف کارروائی کا امکان ، چیف منسٹر فرنویس کی وزیراعظم سے ملاقات

کھڑسے کے خلاف کارروائی کا امکان ، چیف منسٹر فرنویس کی وزیراعظم سے ملاقات

فیصلہ پارٹی کے سپرد ، الزامات سنگین ، قومی صدر بی جے پی امیت شاہ کا ردعمل ، کسی بھی غلطی کی تردید ، کھڑسے کا بیان

نئی دہلی ۔ /2 جون (سیاست ڈاٹ کام) وزیرمال مہاراشٹرا ایکناتھ کھڑسے کا حشر غیریقینی ہے ۔ آج چیف منسٹر مہاراشٹرا دیویندر فرنیوس نے وزیراعظم نریندر مودی اور قومی صدر بی جے پی امیت شاہ سے ملاقاتیں کیں ۔ سمجھا جاتا ہے کہ انہوں نے وزیراعظم سے کھڑسے کے معاملہ پر تبادلہ خیال کیا ۔ سیاسی حریفوں اور بی جے پی کی حلیف شیوسینا کھڑسے کے انڈورلڈ ڈاؤن داؤد ابراہیم سے ٹیلیفونی رابطہ پر ان پر مسلسل تنقید کررہی ہیں ۔ بی جے پی ذرائع کے بموجب امیت شاہ نے کہا کہ سیاسی حریفوں کے کھڑسے پر عائد الزامات سنگین ہیں جبکہ حریف پارٹیاں حکومت کے کرپشن سے پاک حکومت فراہم کرنے کے ادعا پر تنقید کررہے ہیں ۔ کھڑسے نے پرزور انداز میں کہا کہ انہوں نے کوئی غلطی نہیں کی ۔ اپنے آبائی قصبہ جلگاؤں میں پریس کانفرنس کے دوران انہوں نے کہا کہ حالانکہ انہوں نے کوئی غلطی نہیں کی ہے

لیکن پارٹی کی ہدایات پر عمل کریں گے ۔ انہوں نے کہا کہ پارٹی قیادت میرے معاملے میں ایسا کوئی فیصلہ نہیں کرے گی جب تک کہ اس کو حقائق سے واقفیت کے باوجود ایسا کوئی فیصلہ کرنے پر مجبور ہونا پڑے ۔ انہوں نے کہا کہ وہ چالیس سال سے پارٹی کیلئے کام کررہے ہیں اور ممبئی میں اس کی تعمیر میں شریک رہے ہیں ۔ ان تمام خدمات کا اچانک خاتمہ نہیں کیا جاسکتا ۔ انہوں نے کہا کہ ان کے پاس تمام معاہدوں کے دستاویزات موجود ہیں اور کسی نے بھی کوئی غلطی موجود نہیں ہے ۔ وہ قحط سے متاثرہ علاقوں کی صورتحال کا جائزہ لینا جاری رکھیں گے ۔ اس مقصد کیلئے مرکز کی ایک ٹیم ریاست کے دورہ پر ہے اور کھڑسے اس کے ساتھ قحط سے متاثرہ علاقوں کا دورہ کررہے ہیں ۔ دریں اثناء ایک اسٹینگ آپریشن میں انہیں اپنے خلاف عائد الزامات کے سلسلے میں متعلقہ تحقیقاتی عہدیداروں پر اپنے اثر و رسوخ کا استعمال کرتے ہوئے دکھایا گیا ہے ۔ اس طرح ان کی پریشانیوں میں مزید اضافہ ہوگیا ہے ۔ وہ انہیں الزامات کے دوران جلگاؤں سے ممبئی روانہ ہوگئے ۔ انہوں نے کہا کہ وہ پارٹی کی ہدایات پر عمل کریں گے اور اس کے کسی بھی فیصلے کو قبول کریں گے ۔

TOPPOPULARRECENT