Monday , September 25 2017
Home / شہر کی خبریں / کیا بی جے پی عدالتوں سے زیادہ ڈیوڈ ہیڈلی کو مانتی ہے

کیا بی جے پی عدالتوں سے زیادہ ڈیوڈ ہیڈلی کو مانتی ہے

عشرت جہاں فرضی انکاونٹر پر ہیڈلی کے بیان کو صحیح قرار دینے کی کوشش: مشتاق ملک
حیدرآباد۔ 13 فبروری (پریس نوٹ) عشرت جہاں فرضی انکاونٹر کو ڈیوڈ ہیڈلی کے ٹیلی کانفرنس بیان کو بی جے پی صحیح ٹھہرا رہی ہے۔ کوثربی، سہراب الدین شیخ اور عشرت جہاں کو گجرات میں نریندر مودی کی پولیس نے انکاونٹر میں ہلاک کردیا تھا۔ کیا بی جے پی ہائیکورٹ، سپریم کورٹ کے ججس سے زیادہ ڈیوڈ ہیڈلی کو مانتی ہے۔ جناب محمد مشتاق ملک صدر تحریک مسلم شبان نے کہا کہ سپریم کورٹ بنچ نے 2015ء میں اس انکوائری کو فرضی قرار دیا۔ سی بی آئی نے 20 پولیس افسروں کو گرفتار کیا جن کو جیل روانہ کیا گیا۔ کیا ملک کی عدلیہ اہمیت رکھتی ہیں یا ڈیوڈ ہیڈلی، بی جے پی کے صدر امیت شاہ بھی اس میں ملوث پائے گئے تھے۔ جناب محمد مشتاق ملک نے کہا کہ بی جے پی ملک میں نفرت اور تقسیم کا ماحول پیدا کرنے کی کوشش کررہی ہے۔ رام مندر، یکساں سیول کوڈ جیسے مسائل پر مسلسل بیانات دیئے جارہے ہیں اور رام مندر تحریک کو پھر سے زندہ کرکے ملک کا ماحول بگاڑنے کی کوشش کی جارہی ہے۔ جناب محمد مشتاق ملک نے کہاکہ آئی ایس آئی ایس کے نام پر ملک بھر میں گرفتاریاں کی جارہی ہیں اور اگر یہ نوجوان بے قصور ثابت ہوجائیں تو ان کی تباہ شدہ زندگی کو کون سنبھالتا ہے۔ مکہ مسجد، مالیگاؤں، سمجھوتہ ایکسپریس دھماکوں میں جو مسلم نوجوان گرفتار کئے گئے تھے ان کی زندگیاں برباد ہوگئی ہیں۔ بے قصور مسلمانوں کی بازآباد کاری حکومت کی ذمہ داری ہونی چاہئے۔ سنگھ پریوار ملک میں مسلمانوں کو کمزور کرنے اور ان کو بے وقعت کرنے کے منصوبوں پر عمل پیرا ہے۔ آئے دن نئے نئے مسائل کھڑے کئے جارہے ہیں۔ 18 ماہ کے اقتدار میں کئی مسائل کھڑے کردیئے گئے۔ عشرت جہاں کو لشکرطیبہ سے جوڑنے کی پوری کوشش ہورہی ہے جبکہ سی بی آئی اور سپریم کورٹ نے ایسی کوئی بات اپنی رپورٹ اور فیصلہ میں نہیں کہی ہے فرضی انکاونٹر، بے قصوروں کی گرفتاری کے ذریعہ مسلمانوں کو خوفزدہ کرنے کی چال پرانی ہے۔ مسلمان آئی ایس آئی اور آر ایس ایس کو ملک کی یکجہتی کیلئے خطرہ مانتے ہیں اور کسی بھی دہشت گردی کی مسلمان سخت مذمت کرتے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT