Thursday , August 17 2017
Home / ہندوستان / کیرالا اور مغربی بنگال میں مرکزی فورس کی زیر نگرانی اسمبلی انتخابات منعقد کروائیں جا ئیں

کیرالا اور مغربی بنگال میں مرکزی فورس کی زیر نگرانی اسمبلی انتخابات منعقد کروائیں جا ئیں

مرکزی و ز یر مختار عباس نقوی کی نمائندگی پر مثبت اقدامات کرنے الیکشن کمیشن کا تیقن
نئی دہلی ۔ 15 ۔ فروری ( سیاست ڈاٹ کام) مغربی بنگال اور کیرالا میں مجوزہ اسمبلی انتخابات کے دوران تشدد کا اندیشہ ظاہر کرتے ہوئے بی جے پی نے آج الیکشن کمیشن سے رجوع ہوکر یہ مطالبہ کیا ہے کہ دونوں ریاستوں میں مناسب مرکزی فورسس اور مبصرین (آبزرورس) متعین کئے جائیں۔ پارٹی کے ایک وفد نے الیکشن کمیشن کو ایک میمورنڈم پیش کیا اور یہ مطالبہ کیا کہ کیرالا اور مغربی بنگال میں آزادانہ و منصفانہ انتخابات کو یقینی بنانے کے لئے اقدامات کئے جائیں۔ مرکزی وزیر مختار عباس نقوی کی زیر قیادت بی جے پی وفد نے یہ الزام عائد کیا کہ کیرالا میں 2016 ء کیلئے شائع کردہ فہرست رائے دہندگان میں زبردست دھاندلیاں کی گئی ہیں اور یہ مثال پیش کی کہ 2011 ء کی مردم شماری کے مطابق کیرالا کی آبادی 3,34,06,061 نفوس ہے لیکن ووٹر لسٹ میں 2,56,27,620 ووٹر پیش کئے گئے ہیں جو کہ آبادی کے تناسب سے ناممکن ہے اور یہ ثابت ہوتا ہے کہ 18 سال سے کم عمر کے افراد کو مردم شماری میں شامل کرلیا گیا ہے۔ علاوہ ازیں تقریباً 23.63 لاکھ عیر مقیم کیرالائیوں کو ووٹر لسٹ میں شامل نہیں کیا گیا ہے جس کے پیش نظر بی جے پی لیڈروں نے مطالبہ کیا کہ فی الفور اس غلطی کی اصلاح کی جائے اور آن لائین ووٹر رجسٹریشن جاری رکھا جائے۔ انہوں نے یہ اندیشہ ظاہر کیا کہ بعض سیاسی جماعتیں کیرالا میں آزادانہ و منصفانہ انتخابات کو درہم برہم کرنے کیلئے تشدد اور افراتفری پیدا کرسکتے ہیں۔ مزید برآں بی جے پی وفد نے الیکشن کمیشن سے یہ شکایت کی کہ مغربی بنگال کے مختلف علاقوں میں فرقہ وارانہ تشدد کے واقعات پیش آرہے ہیں جس میں سینکڑوں بی جے پی کارکن ہلاک ہوگئے اور شہری انتظامیہ اور پولیس کے بیشتر عہدیداران حکمراں جماعت کے کارکنوں کی طرح کام کر رہے ہیں اور مغربی بنگال کے بعض اضلاع تو قوم دشمن اور قانون شکن عناصر کی آماجگاہ بن گئے ہیں جبکہ حکمراں جماعت ان عناصر کی کارستانیوں پر خاموش تماشائی ہے یا پھر انہیں تحفظ فراہم کر رہی ہے ۔ بی جے پی نے انتخابات کے نگرانکار ادارہ سے کہا کہ دونوں ریاستوں میں اسمبلی انتخابات کے دوران خاطر خواہ تعداد میں مرکزی فورسس اور خصوصی مبصرین متعین کئے جائیں۔ بعد ازاں بی جے پی نے ایک بیان میں یہ ادعا کیا کہ کمیشن نے ان کے مطالبات پر مثبت کارروائی کا تیقن دیا ہے ۔ الیکشن کمیشن نے یہ وعدہ کیا ہے کہ کیرالا میں بوتھ سطح پر ووٹر لسٹ کی تنقیح کی جائے گی اور مغربی بنگال میں آزادانہ و منصفانہ انتخابات کو یقینی بنایا جائے گا اور بی جے پی کے مطالبہ کے مطابق مرکزی فورسس اور خصوصی مبصرین کی تعیناتی عمل میں لائی جاسکی۔ واضح رہے کہ جاریہ سال مغربی بنگال اور کیرالا کے علاوہ آسام ، پانڈیچری اور ٹاملناڈو میں اسمبلی انتخاب م نعقد ہونے والے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT