Monday , August 21 2017
Home / ہندوستان / کیرالا میں ریاگنگ کے واقعات بدبختانہ پرنسپالوں کے خلاف بھی تادیبی کارروائی ممکن

کیرالا میں ریاگنگ کے واقعات بدبختانہ پرنسپالوں کے خلاف بھی تادیبی کارروائی ممکن

تھروننتھا پورم۔/22 ڈسمبر، ( سیاست ڈاٹ کام ) حکومت کیرالانے دو پیشہ ورانہ کالجوں میں مبینہ ریاگنگ کے واقعات کا سخت نوٹ لیتے ہوئے کئے گئے اقدامات پر تعلیمی اداروں سے رپورٹ طلب کی ہے اور خبردار کیا ہے کہ اس طرح کے واقعات کی روک تھام میں ناکام ہونے پر پرنسپالوں کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔ وزیر تعلیم رویندر ناتھ نے آج بتایا کہ تعلیمی اداروں کو یہ بھی ہدایت دی گئی ہے کہ ان طلباء کے خلاف قانون کے مطابق اعظم ترین سزائیں دی جائیں جوکہ ریاگنگت میں ملوث ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ معتمد تعلیمات سے کہا گیا ہے کہ ریاگنت کی روک تھام کیلئے تعلیمی اداروں بشمول پروفیشنل کالجوں کے اقدامات پر ایک رپورٹ پیش کی جائے۔ وزیر موصوف نے کہا کہ ریاگنگ کے نام پر طلباء کو جسمانی اور ذہنی ہراسانی سے باز رکھنے کیلئے واضح قانون موجود ہے اور تعلیمی اداروں میں اس طرح کے واقعات کا اعادہ ہونا بدبختانہ ہے۔ ان حالات میں یہ رپورٹ طلب کی گئی ہے کہ  آیا تعلیمی اداروں کے سربراہان نے ریاگنگ کی روک تھام کیلئے اپنا فریضہ انجام دیا ہے۔اگر کوتاہی اور تساہل پسندی ثابت ہونے پر حکومت پرنسپالوں کے خلاف بھی تادیبی کارروائی کرے گی۔ واضح رہے کہ منجری میں واقع گورنمنٹ میڈیکل کالج کے 21 طلباء اور کوٹائم میں واقع گورنمنٹ پالی ٹکنک کالج کے 7 طلباء کو اپنے جونیرس کی ریاگنگ کے الزام میں معطل کردیا گیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT