Sunday , July 23 2017
Home / شہر کی خبریں / کیروسین سے پاک حیدرآباد کے لیے جلد ہی سروے

کیروسین سے پاک حیدرآباد کے لیے جلد ہی سروے

غریب خاندانوں کے لیے ایل پی جی کا حصول دشوار کن
حیدرآباد ۔ 11 ۔ اپریل : ( ایجنسیز ) : ریاستی محکمہ سیول سپلائز کی جانب سے حیدرآباد کو کیروسین سے پاک بنانے کو یقینی بنانے پر بھر پور توجہ دی جارہی ہے اور اس کے لیے جنگی خطوط کو اختیار کیا جارہا ہے لیکن شہر میں غریبوں کو ایل پی جی سیلنڈرس کی فراہمی کے لیے ہنوز کوئی پلانس نہیں ہیں ۔ چیف راشننگ آفیسر ( سی آر او ) ایم پدما نے کہا کہ ’ ہم نو سرکلس میں ایک سروے کررہے ہیں جہاں فیر پرائس شاپس ( ایف پی ایس ) پر کیروسین کی فروخت کو روک دیا جائے گا ۔ سروے کے بعد ہی ہم کو معلوم ہوسکتا ہے کہ کتنے لوگ دیپم اسکیم کے تحت ایل پی جی کو شفٹ نہیں کرسکتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ سروے کے بعد ہی سی ایس ڈی کی جانب سے پلان بنایا جاسکتا ہے ۔ سی آر او نے کہا کہ ایل پی جی کنکشن کے بغیر فوڈ سیکوریٹی کارڈ ہولڈرس کی تعداد پیر تک 1,47,253 تھی ۔ ان میں زیادہ تر لوگ یقینی طور پر انڈپنڈنٹ ڈیلرس کے پاس ایل پی جی کنکشنس رکھتے ہوں گے ۔ اس سروے سے ہم کو اس کا پتہ چلانے میں مدد ہوگی ۔ محکمہ کی جانب سے حالیہ ہفتوں میں نو سرکلس میں تمام ایف پی ایس کو دیپم اسکیم کے درخواست فارمس روانہ کئے گئے ہیں ۔ لیکن تاحال 59,147 فوڈ سیکوریٹی کارڈ ہولڈرس کو ہنوز دیپم اسکیم کے تحت رجسٹریشن کروانا ہے ۔ محکمہ کے عہدیداروں کو توقع ہے کہ یہ تعداد تقریبا 20,000 تک گھٹ جائے گی ۔ایم شاردا ایک ہاوز کیپر کا کام کرتی ہے اور ماہانہ 12000 روپئے کی فیملی انکم کے ساتھ ایک بی پی ایل کارڈ ہولڈر ہے اور وہ پکوان کے لیے کیروسین کا استعمال کرتی ہے اور وہ اس تیل پر امکانی عائد ہونے والے امتناع سے باخبر نہیں ہے ۔ اس سوال پر کہ آیا وہ ایل پی جی کو اختیار کرنے کی متحمل ہوسکتی ہے ۔ اس نے کہا ’ میں پیسہ کی بچت کروں گی اور ایل پی جی کو اختیار کروں گی ‘ ۔ لیکن جب پوشیدہ چارجس کے بارے میں اس خاتون کو بتایا گیا تو اس نے کہا ’ اس کو پکوان کے لیے گیاس حاصل کرنا مشکل ہوگا لیکن اگر وہ کیروسین پر امتناع عائد کریں تو پھر میرے لیے دوسرا آپشن کیا ہوگا ‘ ۔ پدما نے کہا کہ دیپم اسکیم کے تحت ایل پی جی کے لیے ڈپازٹ کی پوری رقم حکومت کی جانب سے آئیل کمپنیوں کو ادا کی جاتی ہے اور گیس ریگولیٹر مفت فراہم کیا جاتا ہے ۔ تاہم ایل پی جی کوٹرانزیشن کے لیے اسٹارٹ اپ خرچ زیادہ ہے ۔ ایک 14.3 کلو گرام ایل پی جی سلنڈر کی قیمت ڈی بی ٹی ایل کے تحت کیش ٹرانسفر قیمت 811.50 روپئے ہوگی ۔ 342.5 روپئے کی سبسیڈی کے بعد سیلنڈر کی قیمت 489 روپئے ہوگی جو حیدرآباد میں کئی بی پی ایل خاندانوں کے دسترس میں ہے ۔۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT