Tuesday , August 22 2017
Home / شہر کی خبریں / کیلوریز کے استعمال میں حیدرآباد سب سے آگے

کیلوریز کے استعمال میں حیدرآباد سب سے آگے

مختلف غذائی عادت بیماریوں کا موجب ، ملک کے مختلف شہروں میں سروے کے بعد انکشاف
حیدرآباد ۔ 6 نومبر (سیاست نیوز) ملک کے مختلف شہروں میں مختلف غذائی عادات شہریوں میں علحدہ  علحدہ بیماریوں کا مؤجب بن رہے ہیں۔ ہندوستان کے 8 شہروں کے سروے کے بعد یہ بات منظرعام پر آئی ہے۔ شہر حیدرآباد کیلوریز کے استعمال میں ہندوستانی شہروں میں سب سے آگے ہے اور حیدرآبادی عوام کی غذائی عادات موٹاپے اور ذیابیطس جیسی بیماریوں کی وجہ بن سکتی ہے۔ ملک کے مختلف شہروں بالخصوص حیدرآباد، نئی دہلی، بنگلور، چینائی، کولکتہ، لکھنؤ اور تھرواننتاپورم میں کئے گئے سروے میں یہ بات سامنے آئی کہ حیدرآباد میں موجود 502 ذیابیطس کے مریضوں میں 66 فیصد مریض موٹاپے اور زیادہ وزن کا شکار ہے۔ عمومی طور پر یہ بات نوٹس کی گئی ہیکہ ہندوستان میں غذائی عادات و اطوار پر بہت کم توجہ دی جاتی ہے اور روزانہ ورزش کا کلچر بھی بہت کم دیکھا جارہا ہے۔ حیدرآباد میں ذیابیطس کے شکار مریضوں میں بلڈشوگر یکساں نہیں رہتا جوکہ دوسرے درجہ کے ذیابیطس میں شمار کیا جاتا ہے۔ عالمی سطح پر صحت کے متعلق متفکر شہری جتنا ممکن ہوسکے کیلوریز یعنی حراروں کو کم کرنے کوشش کرتے ہیں اور کیلوریز میں کمی کیلئے خصوصی ورزش بالخصوص چہل قدمی وغیرہ پر توجہ دی جاتی ہے لیکن شہر حیدرآباد میں جو غذائیں استعمال ہوتی ہیں، ان کے سروے کے مطابق حیدرآبادی شہری روزانہ 3445 کیلوریز استعمال کرتے ہیں جوکہ ہندوستان کے کسی بھی شہر کی غذائی عادات سے زیادہ ہے۔ حیدرآباد میں ناشتے میں استعمال ہونے والے غذائی اشیاء چکنائی سے بھرپور ہوتی ہیں۔ عام صحتمند آدمی کیلئے 2534 کیلوریز کافی ہوتی ہے جبکہ خواتین میں 2634 کیلوریز کافی ہوتی ہیں لیکن حیدرآباد میں کیلوریز کا استعمال کافی زیادہ ہورہا ہے جس سے کئی مسائل بالخصوص ذیابیطس اور موٹاپے کی شکایات میں اضافہ ہوتا ہے۔

TOPPOPULARRECENT