Saturday , July 22 2017
Home / شہر کی خبریں / کینسر کی مریضہ ظاہر کرکے لاکھوں روپئے امداد وصول

کینسر کی مریضہ ظاہر کرکے لاکھوں روپئے امداد وصول

فیس بک کا استعمال ، سائنس گریجویٹ 22 سالہ سا میہ عبدالحفیظ گرفتار
حیدرآباد /20 اپریل ( سیاست نیوز ) خود کو کینسر کی مریضہ ظاہر کرتے ہوئے سوشیل میڈیا کے ذریعہ لاکھوں روپئے کی امداد وصول کرنے والی سائنس گریجویٹ کو بنجارہ ہلز پولیس نے گرفتار کرلیا ۔ تفصیلات کے بموجب 22 سالہ سامیہ عبدالحفیظ ساکن سعیدآباد دو سال قبل سائنس میں گریجویشن کی تعلیم حاصل کی تھی ۔ لڑکی کے والد عبدالحفیظ جو حلق کے کینسر کے شکار ہوگئے ہیں اور ان کا علاج بنجارہ ہلز میں واقع ایک خانگی دواخانہ میں زیر علاج ہے ۔ سامیہ اپنے والد کی عیادت کیلئے روزانہ کینسر ہاسپٹل جایا کرتی تھی اور وہاں ڈاکٹر سے بھی ملاقات کرتے ہوئے والد کے عارضہ سے متعلق تمام تفصیلات حاصل کرتی تھی ۔ سامیہ نے ڈاکٹر کی مدد سے ایک انٹرویو تیار کیا جس میں ڈاکٹر نے بھی انسانی بنیادوں پر اس کی مدد کرتے ہوئے ویڈیو میں امداد کیلئے اپیل کی تھی ۔ سامیہ نے ڈاکٹر کو یہ ظاہر کیا کہ وہ غریب ہے اور مالی امداد کیلئے عوام کی مدد ضروری ہے ۔ لڑکی نے فیس بک پر ’’ گو فنڈ سامیہ ‘‘ کا ایک پیج تیار کیا جس میں ڈاکٹر کا انٹریو بھی اپ لوڈ کیا ۔ سامیہ نے اپنے والد کے میڈیکل رپورٹ سے چھیڑ چھاڑ کرتے ہوئے اس میں اپنا نام شامل کیا اور سوشیل میڈیا پر بڑے پیمانے پر اسے وائرل کردیا ۔ خلیج ممالک اور دیگر علاقوں میں سامیہ کو 22 لاکھ روپئے حاصل ہوئے اور حالیہ دنوں ریاض سے تعلق رکھنے والے بعض افراد جنہوں نے لڑکی کی مدد کی تھی عیادت کیلئے بنجارہ ہلز واقع دواخانہ پہونچے جہاں پر انہیں زبردست جھٹکا لگا ۔ دواخانہ انتظامیہ نے سامیہ نام کی مریضہ زیر علاج نہ ہونے کی اطلاع دی جس کے نتیجہ میں لڑکی کے دوست نے بنجارہ ہلز پولیس اسٹیشن میں ایک مقدمہ درج کروائی ۔ پولیس نے اسے فوری گرفتار کرلیا ا ور تفتیش کے دوران سامیہ نے پولیس کو بتایا کہ اس نے حاصل کی گئی امداد کی 10 لاکھ روپئے کی رقم اپنے والد کے علاج پر خرچ کیا اور بقایا رقم اپنے قرض کیلئے استعمال کرلی ۔ انسپکٹر مسٹر سرینواس نے بتایا کہ ایس بی ایچ گن فاؤنڈری میں امداد کی رقم حاصل ہوئی تھی اور اب محض پانچ ہزار روپئے اس کے اکاونٹ میں باقی ہے ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT