Saturday , August 19 2017
Home / جرائم و حادثات / کینٹین کی اشیا فروخت کرنے والے سابق فوجی و دوکاندار گرفتار

کینٹین کی اشیا فروخت کرنے والے سابق فوجی و دوکاندار گرفتار

حیدرآباد /21 فروری ( سیاست نیوز ) فوجی عہدیداروں کو دھوکہ دیکر کینٹن کے اشیاء فروخت کرنے والے سابقہ فوجیوں و دوکاندار کو پولیس نے گرفتار کرلیا ۔ بتایا جاتا ہے کہ رچہ کنڈہ پولیس کی اسپیشل آپریشن ٹیم نے ایک خفیہ اطلاع پر کارروائی کرتے ہوئے اس ٹولی کو بے نقاب کردیا جو کم قیمتوں پر ملٹری کینٹین سے اشیاء ضروریہ اور الکٹرانک اشیاء کو خرید کر قریبی دوکاندار کو فروخت کر رہے تھے ۔ ایس او ٹی رچہ کنڈہ نے اس سلسلہ میں اصل سرغنہ سائی سرینواس عمر 50 سال ساکن الوال کو گرفتار کرلیا جس کے بعد پولیس نے 4 سابقہ فوجیوں 46 سالہ اے کانتا راؤ ساکن نریڈمیڈ 44 سالہ لکشمیا ، 63 سالہ بی واروگنٹی ، 44 سالہ سرینواسلو ساکن بوڈاپل کے علاوہ آٹو ٹرالی کے ڈرائیور دیوداس 26 سالہ کو گرفتار کرلیا ۔ پولیس ذرائع کے مطابق یہ لوگ سی ایس ڈی کینٹین کی اشیاء کو زائد قیمتوں پر فروخت کر رہے تھے ۔ کرانہ دوکاندار سرینواس انہیں سی ایس ڈی کینٹین کو اشیاء فروخت کرنے پر بل سے 22 فیصد زیادہ رقم دیتا تھا اور ایک کے بعد دیگر 4 سابقہ فوجیوں سے تعلقات کے بعد اس چھوٹے سے دوکاندار نے ایک گودام کرایہ پر حاصل کرلیا جس کا ماہانہ 5 ہزار روپئے وہ کرایہ ادا کرتا تھا اور یہ سابقہ فوجی کمیشن کی خاطر کینٹین کا سامان اس دوکاندار کی طرف موڑ رہے تھے ۔ ایس او ٹی کے منطابق ملٹری کینٹین سے اشیاء کم قیمتوں پر خریدنے والا شخص ان شیاء کو زائد قیمتوں پر بیگم بازار اور سکندرآباد میں فروخت کرتے ہوئے زائد نفع حاصل کر رہا تھا ۔ ایک خفیہ اطلاع پر پولیس نے تحقیقات کے بعد اس ٹولی کو بے نقاب کردیا اور اس کے قبضہ سے 5 لاکھ روپئے مالیتی اشیاء اور ایک لاکھ سے زائد نقد رقم کے علاوہ آٹو ٹرالی کو ضبط کرلیا ۔

TOPPOPULARRECENT