Wednesday , August 16 2017
Home / شہر کی خبریں / کیٹرنگ خدمات پر 18 فیصد جی ایس ٹی غیر منصفانہ

کیٹرنگ خدمات پر 18 فیصد جی ایس ٹی غیر منصفانہ

عوام کا اضافی رقم ادا کرنے سے انکار ، آمدنی اتنی نہیں ہوتی کہ ٹیکس ادا کیا جائے
حیدرآباد۔12جولائی (سیاست نیوز) تقاریب میں کیٹرنگ خدمات انجام دینے والوں پر 18فیصد جی ایس ٹی عائد کئے جانے کو کیٹرنگ شعبہ سے تعلق رکھنے والے ماہرین غیر منصفانہ قرار دے رہے ہیں اور کہا جا رہا ہے کہ حکومت نے کیٹرنگ خدمات کو جس زمرہ میں رکھا گیا ہے وہ اتنے ٹیکس ادا نہیں کر سکتے کیونکہ کیٹرنگ خدمات صرف سہولتوں کی فراہمی کی کوشش ہوتی ہیں اور ان میں اتنی آمدنی نہیں ہوتی کہ جتنا ٹیکس عائد کیا جا رہا ہے اور حکومت کی جانب سے کیٹرنگ خدمات پر 18فیصد جی ایس ٹی عائد کئے جانے کے سبب عوام جی ایس ٹی کی اضافی رقومات ادا کرنے سے انکار کر رہے ہیں لیکن اس کے باوجود کیٹررس کو جی ایس ٹی کی ادائیگی کرنی پڑے گی جو کہ ان کے لئے ناممکن ہو جائے گا۔ جی ایس ٹی میں کیٹرنگ خدمات کی فراہمی کو 18فیصد کے زمرے میں شامل رکھے جانے کے فیصلہ سے کیٹرنگ خدمات فراہم کرنے والی کمپنیوں میں ناراضگی پائی جاتی ہے کیونکہ ان کا کہنا ہے کہ اب تقریب کا انعقاد کرنے والے ہی کیٹرنگ خدمات فراہم کرنے والوں کی طرح کام انجام دے لیں گے اور انہیں کسی ادارہ کی ضرورت باقی نہیں رہے گی۔ عوام جی ایس ٹی سے بچنے کیلئے نان ویجیٹیرین اور ویجیٹیرین باؤرچی کی علحدہ خدمات کے علاوہ پانی‘ کرانہ ‘ جنرل اور کولڈ ڈرنکس کے علحدہ آرڈر دے رہے ہیں تاکہ ان پر کوئی جی ایس ٹی عائد ہی نہ ہو۔ حکومت کی جانب سے ملک بھر میں ایک ٹیکس کے نام پر جی ایس ٹی کو متعارف کروایا گیا تھا لیکن اس کی زمرہ بندی میں کی گئی غلطیوں میں سدھار لانے کی ضرورت ہے۔کیٹرنگ شعبہ کے افراد کا کہنا ہے کہ کیٹرنگ خدمات کی فراہمی ائیر کنڈیشنڈ ہال میں ریستوراں کی طرح نہیں ہوتی بلکہ کیٹرنگ کیلئے کمپنی کے ذمہ دار خود دن بھر باؤرچی خانہ میں موجود ہوتے ہیں اسی لئے ان پر ریستوراں کے مساوی ٹیکس عائد کیا جانا مناسب نہیں ہے۔مسٹر اشوک ریڈی کانچرلہ نے بتایا کہ ریاست تلنگانہ میں کیٹرنگ شعبہ کو جی ایس ٹی کے سبب ہونے والے نقصان کی پابجائی کی کوئی راہ نظر نہیں آتی اسی لئے جی ایس ٹی کے زمرہ میں تبدیلی لائی جانی ضروری ہے۔ انہوں نے بتایا کہ محکمہ کے عہدیداروں کے علاوہ سرکاردہ شخصیتوں کو اس مسئلہ سے وواقف کروایا جا چکا ہے کہ جس صورتحال کا سامنا کیٹرنگ کمپنیو ںکو ہے ان حالات سے انہیں نکالنے کیلئے جی ایس ٹی کا زمرہ تبدیل کئے جانے کی ضرورت ہے تاکہ انہیں کچھ راحت حاصل ہو سکے اور اگر عوام کی جانب سے جی ایس ٹی کی اضافی رقم ادا کرنے سے انکار بھی کرتے ہیں تو ایسی صورت میں کمپنی کو بھی یہ ادائیگی بوجھ نہیں لگے گی۔ اس کے علا وہ دیگر کیٹرنگ کمپنیوں کا کہنا ہے کہ ملک کے مختلف مقامات پر کیٹرنگ خدمات انجام دینے والے اداروں کی جانب سے اس بات کا جائزہ لیا جار ہاہے کہ مرکزی حکومت سے اس مسئلہ کو کس طرح رجوع کیا جائے کیونکہ گاہک اور حکومت دونوں کے درمیان جی ایس ٹی کے سبب صرف کیٹررس ہی ہیں جو نقصان کا سامنا کر رہے ہیں اور اآئندہ مستقبل میں یہ صنعت بھی بھاری نقصان کا سامنا کرنے پر مجبور ہو سکتی ہے جبکہ اس صنعت سے لاکھوں افراد وابستہ ہیں۔

TOPPOPULARRECENT