Friday , September 22 2017
Home / شہر کی خبریں / کے جی تا پی جی تعلیم پر وزیر تعلیم و کانگریس رکن اسمبلی کے درمیان لفظی تکرار

کے جی تا پی جی تعلیم پر وزیر تعلیم و کانگریس رکن اسمبلی کے درمیان لفظی تکرار

بلند بانگ وعدہ اور عمل نظر انداز ، چنا ریڈی کے ریمارک پر کڈیم سری ہری کا ردعمل
حیدرآباد ۔ 18 ۔ جنوری (سیاست نیوز) تلنگانہ میں کے جی تا پی جی مفت تعلیم سے متعلق ٹی آر ایس کے انتخابی وعدہ کے مسئلہ پر ڈپٹی چیف منسٹر کڈیم سری ہری اور کانگریس کے رکن ڈاکٹر جی چنا ریڈی میں لفظی تکرار ہوئی۔ اسمبلی میں وقفہ سوالات کے دوران آنگن واڑی اداروں میں اساتذہ کی کمی سے متعلق سوال پر ڈاکٹر چنا ریڈی نے کہا کہ ٹی آر ایس نے انتخابات سے قبل کے جی تا پی جی مفت تعلیم کا وعدہ کیا تھا لیکن آج تک اس پر عمل نہیں کیا گیا ۔ کے جی اور پی جی آخر کہاں ہیں۔ چنا ریڈی کے ان ریمارکس پر ڈپٹی چیف منسٹر کڈیم سری ہری نے مداخلت کی اور ریاست میں مختلف طبقات کیلئے قائم کردہ اقامتی اسکولوں کا حوالہ دیا ۔ انہوں نے کہا کہ کے جی تا پی جی اسکیم کے تحت ہی یہ اسکولس قائم کئے گئے ہیں اور ہندوستان کی کسی بھی ریاست میں اس طرح کی مثال موجود نہیں۔ انہوں نے کہا کہ ٹی آر ایس سربراہ کے چندر شیکھر راؤ نے تمام طبقات کی پسماندگی دور کرنے کیلئے یہ منفرد اسکیم شروع کی ہے۔ لہذا کانگریس پارٹی کو حکومت پر غیر ضروری تنقیدوں سے گریز کرنا چاہئے ۔ اس کے جواب میں ڈاکٹر چنا ریڈی نے کہا کہ اقامتی اسکولس پانچویں جماعت تا انٹرمیڈیٹ تک تعلیم دے رہے ہیں۔ لہذا ان میں کے جی اور پی جی دونوں نہیں ہیں ، اس پر ایوان میں قہقہے گونجنے لگے۔ کڈیم سری ہری نے دوبارہ وضاحت کی کہ حکومت کی اسکیم کا مقصد تعلیمی پسماندگی دور کرنا ہے اور اپوزیشن کو اسکیم کے نام پر سیاست نہیں کرنی چاہئے ۔

TOPPOPULARRECENT