Wednesday , October 18 2017
Home / اضلاع کی خبریں / کے سی آر حکومت میں عوامی بہبود نظر انداز

کے سی آر حکومت میں عوامی بہبود نظر انداز

خاندانی مفادات کو ترجیح، محبوب نگر میں کانگریس قائدین کا خطاب
محبوب نگر۔/6نومبر، ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) چیف منسٹر کے سی آر عوامی بہبود پر توجہ دینے اور اقدامات کرنے کی بجائے اپنے خاندانی بہبود اور مفادات کیلئے مسلسل اقدامات کرتے جارہے ہیں۔ ناگر کرنول ایم پی نندی یلیا، ونپرتی ایم ایل اے جی چنا ریڈی، گدوال ایم ایل اے ڈی کے ارونا نے یہ الزامات چیف منسٹر پر عائد کئے۔ کولا پور چوراستہ پر یوتھ کانگریس کے زیر اہتمام ہفتہ کے روز منعقدہ جلسہ سے یہ قائدین خطاب کررہے تھے۔ جلسہ کی صدارت کولا پور حلقہ کے کانگریس انچارج ہرش وردھن ریڈی نے کی۔ ڈی کے ارونا نے کہا کہ کانگریس حکومت کی جاری کردہ اسکیمات کو ٹی آر ایس ختم کرتی جارہی ہے۔ ونپرتی ایم ایل اے جی چناریڈی نے کہا کہ تلنگانہ ریاست میں 14لاکھ طلباء زیر تعلیم ہیں ان کو فیس ری ایمبرسمنٹ کے تحت 3250 کروڑ روپئے منظور کرنا ہے۔ چیف منسٹر عمارتوں کی پوجا، تہوار اور دیگر چیزوں پر بے تحاشہ رقم خرچ کررہے ہیں لیکن ایس سی، ایس ٹی ، بی سی اور مائناریٹی طلباء کی تعلیم کے فنڈز کو روکنا بڑی ہی افسوسناک بات ہے۔ انہوں نے خطاب کے دوران ’ پاگل کے ہاتھ میں پتھر ‘ کے محاوہ کا حوالہ دیا۔ انہوں نے مزید کہا کہ چنم باوی، ویپگنڈلا ، پالکل ، کولا پور حلقہ میں تھے ونپرتی ضلع میں شامل کئے جانے سے وہاں کے عوام میں ایک نیا جذبہ پیدا ہوا ہے۔ انہوں نے کولا پور کو ریونیو ڈیویژن بنانے کا مطالبہ کیا۔ نندی یلیا نے کہا کہ تلنگانہ حکومت تعلیم کے معاملہ میں مجرمانہ غفلت برت رہی ہے۔ فیس ری ایمبرسمنٹ کی عدم اجرائی سے پسماندہ طبقہ کے طلباء کا تعلیمی مستقبل داؤ پر لگا ہوا ہے۔ کے دامودھر ریڈی ایم ایل سی نے حکومت پر تمام طبقات خصوصاً کسان ، خواتین اور طلباء کے ساتھ ناانصافی کا الزام عائد کیا۔ انہوں نے اعلان کیا کہ کانگریس پارٹی ٹی آر ایس حکومت کی عوام دشمن پالیسیوں سے عوام کو واقف کروائے گی۔ جلسہ میں طلباء کی بھاری تعداد شریک تھی۔ اس موقع پر کانگریس کی ضلع مہیلا صدر مینماں، جگن موہن ریڈی اور دیگر موجود تھے۔

TOPPOPULARRECENT