Wednesday , August 23 2017
Home / شہر کی خبریں / کے سی آر کی خصوصی پوجا چنڈی یگم کا اختتام

کے سی آر کی خصوصی پوجا چنڈی یگم کا اختتام

پانچ روزہ پروگرام میں مرکزی وزراء ، گورنرس اور دیگر اہم شخصیات کی شرکت
حیدرآباد۔ 27 ڈسمبر (پی ٹی آئی) تلنگانہ کے چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ کی طرف سے منعقدہ پانچ روزہ ہندو مذہبی رسومات اور خصوصی پوجا کا آج اختتام عمل میں آیا۔ انہوں نے عالمی امن اور عوام کی فلاح و بہبود کیلئے اس پوجا کا اہتمام کیا تھا۔ ’ایوتا چنڈی مہا یگم‘ کا 23 ڈسمبر کو چندر شیکھر راؤ کے فارم ہاؤز واقع موضع یراولی ضلع میدک میں آغاز ہوا تھا جس میں تمام پانچ دن تک منتروں اور بھکتی پروگراموں کا بلاوقفہ جاپ جاری رہا، ان مذہبی رسومات میں بھجن اور دیومالائی کہانیوں کا پاٹھ بھی شامل تھا۔ اختتامی پوجا میں کے سی آر کے آندھرائی ہم منصب این چندرا بابو نائیڈو نے شرکت کی، تاہم صدرجمہوریہ پرنب مکرجی جو آج اس پروگرام میں شریک ہونے والے تھے، لیکن پوجا کے مقام پر آگ لگنے کے واقعہ کے بعد انہوں نے اپنا دورہ منسوخ کردیا۔ کے سی آر نے پہلے دن ’چنڈی ماتا‘ مورتی کی خصوصی پوجا کرتے ہوئے ان مراسم کا آغاز کیا تھا جن میں 1,100 پجاریوں نے اپنے نائبین کی مدد سے 101 آتش دانوں (مقدس آگ) کے مراسم انجام دیئے اور کئی ہزار مرتبہ وید منتروں کا جاپ کیا گیا۔ آندھرا پردیش اور تلنگانہ کے گورنر ای ایس ایل نرسمہن، مرکزی وزراء ایم وینکیا نائیڈو، بنڈارو دتاتریہ اور سجنا چودھری، مہاراشٹرا کے گورنر وِدیا ساگر راؤ، تملناڈو کے گورنر کے روشیا کے بشمول کئی اہم شخصیات نے پوجا میں حصہ لیا۔ دیگر بے شمار ممتاز شخصیات میں این سی پی کے صدر شرد پوار اور متعدد ہندو مذہبی پیشوایان نے شرکت کی۔ قبل ازیں اپوزیشن جماعتوں بی جے پی اور سی پی آئی ایم نے اس پوجا تقریب پر سخت تنقید کرتے ہوئے کے سی آر پر سرکاری مشنری کا بے جا استعمال اور عوامی دولت کا اسراف کرنے کا الزام عائد کیا۔ سی پی آئی ایم نے کہا کہ یاگم کا اہتمام دستور کے مغائر ہے کیونکہ اس سے توہم پرستی پھیلتی ہے، تاہم چندر شیکھر راؤ نے دعویٰ کیا کہ ان تقاریب پر کوئی سرکاری رقم خرچ نہیں کی گئی۔ انہوں نے کہا کہ ’’یہ خالصتاً میری اپنی یگم ہے۔ میرے چند ساتھیوں نے مدد کی تھی۔ میں اپنے شخصی کھاتے سے رقم خرچ کررہا ہوں۔ سرکاری خزانہ سے ایک بھی نیا پیسہ استعمال نہیں کیا گیا‘‘۔

TOPPOPULARRECENT