Wednesday , August 23 2017
Home / Top Stories / فینانسرس کے چنگل سے آزادی کیلئے ہر طبقہ کی معاشی ترقی کو یقینی بنانے کی ضرورت

فینانسرس کے چنگل سے آزادی کیلئے ہر طبقہ کی معاشی ترقی کو یقینی بنانے کی ضرورت

این ڈی آر بی ٹی میں سمینار ، گورنر ریزرو بینک آف انڈیا ڈاکٹر رگھورام جی راجن کا خطاب
حیدرآباد۔18جولائی (سیاست نیوز) غریب عوام کو فینانسرس کے چنگل سے آزاد کروانے کیلئے یہ ضروری ہے کہ ہر طبقہ کی معاشی ترقی کو یقینی بنانے کے اقدامات اور انہیں ترقیاتی عمل کا حصہ بنایا جائے۔عوام کو جی ڈی پی سے زیادہ معاشی انحطاط و افراط زر کی فکر لاحق ہوتی ہے۔ مسٹر رگھورام جی راجن گورنر ریزرو بینک آف انڈیا نے آج نیشنل انسٹیٹیوٹ آف رورل ڈیولپمنٹ کی جانب سے منعقدہ سمینار کی افتتاحی تقریب سے خطاب کے دوران یہ بات کہی۔ مسٹر رگھورام راجن نے بتایا کہ عالمی معاشی انحطاط کے دور میں بھی ہندستانی معیشت کو مستحکم رکھا گیا جو کہ ایک بڑا کارنامہ ہے۔ انہوں نے تمام طبقات با لخصوص غریبوں کو معاشی ترقی کا حصہ بنانے کی پرزور وکالت کرتے ہوئے کہا کہ ملک کے بینک کاری نظام میں تبدیلیوں کی ضرورت ہے کیونکہ فی الحال بینک میں قرض کیلئے داخل کی جانے والی درخواست کے جو فارم ہیں ان کا جائزہ لیا جائے تو یہ پتہ چلتا ہے کہ 10000روپئے کیلئے جو فارم ہے وہی فارم 10لاکھ روپئے قرض کیلئے دیا جاتا ہے ۔ بینک کاری نظام بھی ایک تجارت ہے اور اس تجارت میں بھی فطری طور پر عہدیدار بڑے گاہک کی جانب جلد متوجہ ہوتے ہیں۔ مسٹر رگھورام راجن نے کہا کہ ملک کی معاشی ترقی اور عوام کو معاشی پسماندگی سے نکالنے کیلئے یہ ضروری ہے کہ فینانشل لٹریسی سنٹرس کا قیام عمل میں لایا جائے۔ تاحال 1329ایسے مراکز قائم کئے گئے ہیں لیکن اس سلسلہ میں مزید کام کئے جانے کی ضرورت ہے۔ جب تک عوام کو با شعور بناتے ہوئے انہیں معاشی ترقی کے عمل کا حصہ نہیں بنایا جاتا اس وقت تک مجموعی ترقی کو عملی جامہ پہنایا جانا ممکن نہیں ہے۔ غریب عوام کو سود خوروں کے چنگل میں پھنسنے سے بچانے کیلئے ضروری ہے کہ قرض کی فراہمی کے نظام میں آسانیاں پیدا کی جائیں ۔انہوں نے بتایا کہ ایسا کرنے میں قرضوں کی عدم واپسی کا خطرہ رہتا ہے لیکن ان خطرات سے نمٹنے کیلئے میکانزم تیار کیا جا سکتا ہے اس سلسلہ میں فیصلہ کا اختیار بینک کو نہیں بلکہ حکومت کو ہوتا ہے اور حکومت اپنے اختیارات کا استعمال کرتے ہوئے یہ فیصلہ کر سکتی ہے۔ معاشی خدمات کی انجام دہی میں مقامی افراد کے دخل کی اہمیت کا تذکرہ کرتے ہوئے مسٹر رگھورام راجن نے بتایا کہ مقامی معاشی ادارے مقامی عہدیداروں و ملازمین کے ساتھ تیز رفتار ترقی کو یقینی بنا سکتے ہیں اور اس ترقی میں مجموعی ترقی کی گنجائش بھی زیادہ ہوتی ہے اس عمل کے ذریعہ تیز رفتار ترقی کی مثال ایچ ڈی ایف سی بینک نے سری نگر میں پیش کی ہے جہاں مقامی ملازمین کے تقرر کے ذریعہ خدمات کو وسعت دی گئی تھی۔گورنر آر بی آئی مسٹر رگھورام راجن نے بتایا کہ بہت جلد کھاتوں کے ذریعہ کھاتوں میں رقومات کی منتقلی میں مزید آسانیاں پیدا ہوں گی ۔ انہوں نے مزید کہا کہ پائیدار اور مستقل ترقی کیلئے یہ ضروری ہے کہ سماج کے ہر طبقہ کو معاشی ترقی کے عمل کا حصہ بنایا جائے۔ اس سمینار کی ابتداء میں مسٹر ڈبلیو آر ریڈی ڈائریکٹر جنرل این آئی آر ڈی نے خیر مقدمی خطاب کے دوران ملک میں معاشی ترقی کے عمل اور اس کے اثرات کے متعلق واقف کروایا۔ علاوہ ازیں مسٹر وکاس سنگھ نے بھی مخاطب کیا۔ سمینار میں ماہرین معاشیات‘ بینک عہدیدار ‘ غیر سرکاری تنظیموں کے ذمہ دار اور دیہی ترقیاتی عمل کی منصوبہ بندی میں مصروف عہدیدار موجود تھے۔

TOPPOPULARRECENT