Thursday , September 21 2017
Home / شہر کی خبریں / کے چندر شیکھر راؤ کی قیادت میں ہر شعبہ کی ترقی کیلئے نمایاں قدم

کے چندر شیکھر راؤ کی قیادت میں ہر شعبہ کی ترقی کیلئے نمایاں قدم

اپوزیشن بالخصوص کانگریس و تلگو دیشم پارٹیاں بوکھلاہٹ کا شکار ، بی سمن ٹی آر ایس ایم پی کا بیان
حیدرآباد ۔ 13۔ ستمبر (سیاست نیوز) ٹی آر ایس کے رکن پارلیمنٹ بی سمن نے اپوزیشن جماعتوں پر ریاست کی ترقی میں رکاوٹ پیدا کرنے کا الزام عائد کیا اور کہا کہ چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ کی قیادت میں سماج کے ہر شعبہ کی ترقی کیلئے نمایاں قدم اٹھائے گئے لیکن کانگریس اور دیگر اپوز یشن جماعتیں ترقی میں رکاوٹ پیدا کر رہی ہیں ۔ میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے بی سمن نے کہا کہ اپوزیشن کا کام حکومت کے ہر کام کی مخالفت کرنا ہوچکا ہے ۔ حالانکہ اپوزیشن کو تعمیری رول ادا کرتے ہوئے ترقیاتی اور فلاحی اسکیمات میں تعاون اور تجاویز پیش کرنے چاہئے ۔ انہوں نے کہا کہ عوامی بھلائی کیلئے حکومت کی جانب سے کئی قدم ا ٹھائے گئے لیکن یہ اپوزیشن کو دکھائی نہیں دے رہے ہیں۔ ارکان قانون ساز کونسل سرینواس ریڈی اور راملو نائک کے ہمراہ اپوزیشن کو نشانہ بناتے ہوئے سمن نے کہا کہ تلنگانہ میں عجیب صورتحال ہے کہ اپوزیشن جماعتیں عوام کی بھلائی کو برداشت نہیں کر رہی ہے۔ بے بنیاد الزامات اور عدالتوں کا سہارا لیتے ہوئے رکاوٹ پیدا کرنا کانگریس اور تلگو دیشم کا شیوہ بن چکا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ زرعی شعبہ کی ترقی کیلئے کے سی آر نے جو حکمت عملی تیار کی ہے ، اس کے تحت کسانوں کو خوش حال بنانے کا عہد کیا گیا ہے ۔ گزشتہ حکومتوں کے دوران معاشی بدحالی کے سبب کسان خودکشی پر مجبور تھے لیکن ٹی آر ایس دور حکومت نے کسانوں کی خوشحالی پر توجہ دی گئی ہے ۔ حکومت نے آئندہ مالیاتی سال سے کسانوں کو دو فصلوں کیلئے فی ایکر 8000 روپئے کی امداد فراہم کرنے کا فیصلہ کیا ہے ۔ کانگریس اور تلگو دیشم دور میں جو کسان خودکشی پر مجبور تھے ، آج وہ خوشحال زندگی بسر کر رہے ہیں۔ کسانوں کی خوشحالی اور ترقی اپوزیشن کو برداشت نہیں۔ آبپاشی پراجکٹس کی مخالفت کیلئے عدالتوں میں مقدمات دائر کئے گئے اور اراضیات کے حصول کا عمل روکنے کی کوشش کی گئی۔ انہوں نے کہا کہ فرضی کسانوں کے نام پر مقدمات دائر کئے جارہے ہیں ۔ حکومت کی جانب سے ہر گاؤں میں قائم کی جانے والی کسانوں کی سمیتیوں کی مخالفت کو افسوسناک قرار دیتے ہوئے بی سمن نے کہا کہ پردیش کانگریس کے صدر اتم کمار ریڈی جن کا زراعت سے کوئی تعلق نہیں ہے ، وہ زراعت کے بارے میں بات چیت کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ عدالتوں میں اپوزیشن کو کئی معاملات میں ناکامی کا سامنا کرنا پڑا ، پھر بھی اس نے مخالفت کا رویہ ترک نہیں کیا ۔ سمن نے کہا کہ اگر کسانوں کی بھلائی میں رکاوٹ پیدا کرنے کی کوشش کی گئی تو آئندہ انتخابات میں کسان کانگریس اور تلگو دیشم کو سبق سکھائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ تلنگانہ ریاست کی تشکیل کے بعد کسانوں کے قرضہ جات معاف کرتے ہوئے انہیں خوشحالی کے راستہ پر گامزن کیا گیا ۔ ارکان قانون ساز کونسل نے کہا کہ ٹی آر ایس کی حکومت دراصل کسانوں کی حکومت ہے۔ گزشتہ 40 برسوں میں کانگریس نے زرعی شعبہ اور کسانوں کے لئے جو کچھ کیا ، اس سے کہیں زیادہ ٹی آر ایس حکومت نے صرف تین برسوں میں اقدامات کئے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT