Saturday , April 29 2017
Home / کھیل کی خبریں / کے کے آر کے خلاف آج گجرات کامیابی کا خواہاں

کے کے آر کے خلاف آج گجرات کامیابی کا خواہاں

کولکاتہ۔20 اپریل (سیاست ڈاٹ کام ) انڈین پریمیئر لیگ میں زبردست کھیل کا مظاہرہ کرکے سرفہرست رہنے والی گوتم گمبھیر کی کولکتہ نائٹ رائیڈرس کل اپنے گھریلو میدان میں ناقص کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والی ٹیم گجرات لائنس سے مقابلہ کرے گی۔کولکاتہ گزشتہ پانچ میچوں میں سے چار میں کامیابی اور ایک میچ میں شکست کے ساتھ سرفہرست ہے جبکہ سریش رائناکی گجرات نے پانچ میچوں میں صرف ایک میچ جیتا ہے اور دو نشانات کے ساتھ سب سے آخری نمبر پر پہنچ چکی ہے ۔آئی پی ایل میں شاید آخری مرتبہ کھیل رہی گجرات کی ٹیم فی الحال نفسیاتی طور پر بھی دباؤ میں ہے اور اس کے کپتان رائنا بھی ٹیم کا حوصلہ بڑھانے میں اب تک ناکام رہے ہیں۔ دو مرتبہ کی چیمپئن کے کے آر نے اپنے گزشتہ میچ میں میزبان دہلی ڈیئر ڈیولس کو چار وکٹ سے شکست دی تھی جبکہ گجرات نے رائل چیلنجرز بنگلور سے اپنے گھریلو راجکوٹ میدان می21  رنز سے شکست کھائی تھی۔ ٹورنمنٹ کی سرفہرست اور سب سے آخری نمبر کی ٹیموں کے درمیان سب سے بڑا فرق فی الحال خود اعتمادی کا دکھائی دیتا ہے ۔یہ حیران کن ہیکہ گجرات بڑا اسکور بنانے کے باوجود میچ ہار رہی ہے ۔ بنگلور کے خلاف 200  سے زیادہ کے ہدف کا تعاقب کرتے ہوئے بھی صرف21  رنز سے میچ ہاری تھی۔ گجرات کی سب سے بڑی کمزوری اس کی بولنگ ہے جس میں تجربہ کار اور زبردست بائیں ہاتھ کے اسپنر گیندباز رویندر جڈیجہ جیسا کھلاڑی مسلسل ناکام ثابت ہو رہا ہے ۔ جڈیجہ نے گزشتہ تین میچوں میں10.91 کی ناقص کارکردگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے131 رنز دے کر محض ایک وکٹ حاصل کی ہے ۔ ٹیم میں واپسی کے بعد وہ مسلسل ناکام رہے ہیں اور گزشتہ میچ میں انہوں نے چار اووروں میں57  رن۔ دے کر مخالف ٹیم کا اسکور214  تک پہنچایا۔ اینڈریو ٹائی سوا کوئی بولر اب تک گجرات کے لئے کچھ خاص کمال نہیں کر سکا ہے ۔ ٹائی تین میچوں میں سب سے زیادہ سات وکٹ لے کر گجرات کے کامیاب بولر ہیں ۔ تجربہ کار پروین کمار نے چار میچوں میں تین وکٹ حاصل کئے اور دوسرے نمبر پر ہیں ۔ ان کے علاوہ باسل تھمپی، دھول کلکرنی، شول کوشک جیسے کوئی بھی امیدوں پر پورا نہیں اترے ہیں اور اگر رائنا کی ٹیم کو ٹورنمنٹ میں اپنی مقام  بہتر بنانا ہے تو اسے یقینا اپنے بولنگ شعبہ کو مضبوط کرنا ہوگا۔بیٹنگ میں گجرات کے پاس کپتان رائنا، برنڈن مکالم، دنیش کارتک، آرون فنچ اور ڈیون اسمتھ جیسے بہترین کھلاڑی موجود ہیں اور وہ مسلسل اچھا کھیل رہے ہیں۔ گجرات بھلے ہی شکست کا منہ دیکھ رہی ہے لیکن اس کے بیٹسمینس بورڈ پر مشکل اسکور کا اضافہ کر رہے ہیں اور یہی اس کی طاقت ہے ۔ اپنے گزشتہ میچ میں ان کھلاڑیوں نے کافی جدوجہد کے باوجود  ٹیم 192  تک پہنچ کر21  رنوں سے میچ گنوا بیٹھی۔ مکالم گزشتہ پانچ میچوں میں دو نصف سنچریوں سمیت 225 رن بنا کر ٹیم کے بہترین اسکورر ہیں تو کپتان رائنا دوسرے نمبر پر ہیں۔  دوسری طرف کے کے آر اپنے میدان پر اور بھی جارحیت کے ساتھ کھیلے گی اور گزشتہ کارکردگی کو دہرانے کی کوشش کرے گی۔ کے کے آر نے آئی پی ایل10 میں گجرات کے ساتھ اپنے پہلے مقابلے میں31 گیندوں کے رہتے ہوئے جس طرح یکطرفہ جیت درج کی تھی اس کے بعد وہ حریف ٹیم پر اور بھی بھاری پڑ سکتی ہے ۔کے کے آر کی اصل طاقت ٹیم کا توازن ہے جس میں کپتان گمبھیر، منیش پانڈے ، یوسف پٹھان، رابن اتھپا اور اوپننگ میں سب کو چونکانے والے اسپنر سنیل نارائن رن بٹور رہے ہیں اور کسی بھی ہدف کا تعاقب کر سکتے ہیں تو بولنگ میں کرس ووکس، سنیل، کلدیپ یادو، کولن ڈی گریڈہومے اور امیش یادو موجود ہیں۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT