Sunday , August 20 2017
Home / جرائم و حادثات / ک1.35کروڑ روپئے پرانی کرنسی کی تبدیلی

ک1.35کروڑ روپئے پرانی کرنسی کی تبدیلی

40-60فیصد کمیشن پر معاملت‘ 3افراد گرفتار
حیدرآباد /20 مارچ ( سیاست نیوز ) پرانے شہر کے علاقہ سنتوش نگر میں کل رات ضبط شدہ نقلی کرنسی کا اصل سرغنہ پولیس گرفت سے باہر ہے ۔ تاہم ڈپٹی کمشنر آف پولیس ساؤتھ زون نے بتایا کہ اس کرنسی تبدیلی کے اصل سرغنہ ایکسچینج بروکر اشوک کمار کی گرفتاری کیلئے خصوصی ٹیموں کو تشکیل دیا گیا ہے ۔ یہ بات انہوں نے آج ایک پریس کانفرنس کے دوران بتائی اور اس دوران انہوں نے کل رات گرفتار 3 افراد 47 سالہ سریدھر ساکن کتہ پیٹ 39 سالہ نجیب علی خان ساکن چنچل گوڑہ 54 سالہ شیخ نصیر ساکن فانی گراؤنڈ ملے پلی کو میڈیا کے روبرو پیش کیا اور تفصیلات بتائی ۔ جبکہ اس معاملہ میں ملوث مزید 10 افراد جو مفرور ہیں کی تلاش بھی جاری ہیں ۔ جن کی شناخت ساجد ، منصور ، احمد ، اشوک کمار ، شجاعت علی خان ، بابر علی خان ، خورشید عالم خان ، نوید روح اللہ ، ابراہیم علی خان ، بشارت علی خان کی حیثیت سے پولیس نے کی ہے ۔ نصیر نے جوکہ سرکاری ملازم ہیں اپنے ساتھی گنیش جو رئیل اسٹیٹ کا تاجر سے رقم بدلنے کی کوشش میں تھا ۔ یہ شخص گڈی ملکاپور کا ساکن بتایا گیا ہے ۔ منسوخ شدہ کرنسی ایک ہزار اور 500 روپئے کی نوٹوں پر مشتمل ایک کروڑ 35 لاکھ 80 ہزار روپئے تھے ۔ انہیں ضبط کرلیا گیا اور ضبط شدہ کرنسی کو انکم ٹیکس محکمہ کے حوالے کردیا ۔ واضح رہے کہ پولیس نے 14مارچ کو ایک ذہنی معذور شخص کو گرفتار کیا تھا جس نے مبینہ طور پر 9.91لاکھ روپئے کی جعلی کرنسی بینک میں جمع کرانے کی کوشش کی تھی جس پر ’’چلڈرن بینک آف انڈیا ‘‘ تحریر تھا ۔ پولیس نے کل بھی ایک شخص کو 6.20لاکھ روپئے کی نئی 2000روپئے جعلی کرنسی کے ساتھ گرفتار کیا تھا ۔

TOPPOPULARRECENT