Monday , June 26 2017
Home / شہر کی خبریں / ک21 کروڑ بلدی ٹیکس ، 9 کروڑ آبرسانی بقایا جات کی وصولی

ک21 کروڑ بلدی ٹیکس ، 9 کروڑ آبرسانی بقایا جات کی وصولی

بینکوں میں مشکلات سے پریشان عوام کی بقایا جات کی ادائیگی
حیدرآباد ۔ 11 ۔ نومبر : ( این ایس ایس) : مرکزی حکومت کے پانچ سو اور ہزار روپئے کے نوٹس کی منسوخی جی ایچ ایم سی کو ٹیکس کی شکل میں زبردست آمدنی کا ذریعہ ثابت ہوا ۔ بلدیہ حیدرآباد کو 21 کروڑ ، آبرسانی بورڈ کو 9 کروڑ کے ٹیکس بقایا جات وصول ہوئے توقع کی جارہی ہے کہ ٹیکس وصولی کا نشانہ 50 کروڑ تک پہنچ سکتا ہے ۔ جی ایچ ایم سی کی جانب سے ٹیکس ادائیگی کے خصوصی کاونٹرس کھولے گئے تھے بتایا جاتا ہے عوام کو پانچ سو اور ہزار کے نوٹوں کو تبدیل کرانے میں اے ٹی ایمز اور بینکوں میں شدید مشکلات پیش آنے کے سبب لوگوں نے بلدی ٹیکس اور آبرسانی بلوں کے بقایا جات کی ادائیگی کو ترجیح دی اور رقم ادا کرنا شروع کیا ۔ مئیر حیدرآباد بی رام موہن اور کمشنر بلدیہ بی جناردھن ریڈی نے عوام سے ٹیکس کی ادائیگی بلوں کے بقایا جات کی اپیل کی تھی بلدیہ کے 24 سرکلوں میں عوام کی جانب سے اس کا مثبت ردعمل دیکھنے کو ملا ۔ عوام نے می سیوا سنٹرس ، خصوصی کاونٹرس پر ٹیکس ادا کئے جب کہ ٹیکسوں کی وصولی کے لیے مراکز ہفتہ اور اتوار کو کام کریں گے ۔ وزیر بلدی نظم و نسق نے بلدی عہدیداروں سے زائد اوقات تک خدمات کی اپیل کی ہے تاکہ لوگ ٹیکس ادا کرسکے ۔۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT