Friday , October 20 2017
Home / ہندوستان / گاؤ رکھشا کے نام پر ملک میں افراتفری کا ماحول

گاؤ رکھشا کے نام پر ملک میں افراتفری کا ماحول

کیا وزیراعظم نے غیردلتوں کو نشانہ بنانے کا لائیسنس دیدیا ، یچوری کا استفسار
نئی دہلی ۔ 9 اگسٹ ۔(سیاست ڈاٹ کام) سی پی آئی ایم لیڈر سیتارام یچوری نے آج کہا کہ گاؤ رکھشا کے نام پر افراتفری کا ماحول پیدا کیا جارہا ہے ۔ انھوں نے وزیراعظم نریندر مودی سے اس ضمن میں واضح بیان دینے کا مطالبہ کیا اور گاؤ رکھشا تنظیموں کے خلاف کارروائی پر زور دیا۔ انھوں نے کہا کہ حکومت کا رویہ محض ایک دکھاوا ہے ۔ وزیراعظم نریندر مودی کے دلتوں سے متعلق حالیہ بیان کا انھوں نے بالی ووڈ فلمس کے ڈائیلاگ سے تقابل کیا ۔ یچوری نے آج راجیہ سبھا میں کہا کہ وزیراعظم کا یہ کہنا ہے کہ ’’دلتوں پر حملہ نہ کیجئے ‘‘ ، کیا اس کا یہ مطلب ہے کہ غیردلتوں جیسے مذہبی اقلیتوں پر حملے کا لائیسنس دیا جارہا ہے ۔ انھوں نے کہاکہ گاؤ تحفظ کے نام پر سب سے پہلا ہلاک ہونے والا شخص اخلاق ہے ، جسے دادری میں ہجوم نے نشانہ بنایا تھا ۔ انھوں نے کہا کہ حکومت کو یہ واضح موقف اختیار کرنا چاہئے کہ وہ قانون کی بالادستی پر قائم رہے گی اور جو کوئی اس کی خلاف ورزی کرے اُس پر کارروائی ہوگی ۔ سیتارام یچوری نے کہا کہ حکومت کا موجودہ طرز عمل بالکل اُسی طرح ہے کہ پہلے عوام کو بدترین صورتحال کا مزہ چکھایا جائے اور پھر اُس کے بعد مزاحمتی موقف اختیار کرتے ہوئے یہ تاثر دیا جائے کہ کم از کم نقصان نہ پہونچاتے ہوئے اُن کا فائدہ کیا جارہا ہے ۔ انھوں نے آج وقفۂ صفر کے دوران کہا کہ وزیراعظم کو ایوان میں آکر قانون کی خلاف ورزی کرنے والوں پر کارروائی یقینی بنانی چاہئے ۔ جنتادل یو لیڈر شردیادو نے بھی حساس معلومات کے افشاء کا مسئلہ اُٹھایا جن میں بجٹ سے متعلق کئی معلومات جو کارپوریٹ ادارے سے مربوط ہیں اُن کے افشاء کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ حکومت صرف نچلی سطح کے ذمہ داروں کو قانون کے دائرہ میں لاتی ہے جبکہ حقیقی مجرمین کو آزاد چھوڑ دیاجاتا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT