Friday , August 18 2017
Home / Top Stories / گاؤ رکھشکوں پر پابندی عائد کرنے کا مطالبہ

گاؤ رکھشکوں پر پابندی عائد کرنے کا مطالبہ

دلتوں کے خلاف حملوں پر وزیر اعظم کے ’ مگر مچھ کے آنسو ‘ ۔سیتا رام ایچوری
نئی دہلی۔/16ستمبر، ( سیاست ڈاٹ کام ) بائیں بازوکی جماعتوں اور دلت تنظیموں کے قائدین نے آج این ڈی اے حکومت کو تنقید کا نشانہ بنایا اور یہ ادعا کیا کہ ’ برادری ‘ کے خلاف مظالم میں تشویشناک حد تک اضافہ ہوگیا اور وزیر اعظم نریندر مودی سے یہ سوال کیا ہے کہ گاؤ رکھشکوں کی کارستانی پر خاموش تماشہ کیوں دیکھ رہے ہیں۔ یہاں وہ ایک ریالی کو مخاطب کرتے ہوئے مختلف قائدین بشمول سی پی ایم کے جنرل سکریٹری سیتا رام ایچوری نے حکومت پر ملک کے سماجی تانے بانے کو تباہ کردینے کا الزام عائد کیا اور یہ انتباہ دیا کہ دلتوں پر حملوں کے خلاف بڑے پیمانے پر احتجاج شروع کردیا جائے گا۔ مذکورہ احتجاجی ریالی میں حکومت کو خبردار کیا گیا کہ’’ تحفظ گاؤ ‘‘ کے نام پر دلتوں کے خلاف حملے بڑھتے جارہے ہیں اور حکومت کو مجرمین کے خلاف سخت کارروائی کرنی چاہیئے۔ ریالی کے دوران ایچوری نے حکومت سے دریافت کیا کہ گاؤ رکھشکوں کے خلاف امتناع کیوں عائد نہیں کیا جارہا ہے؟ دلتوں کو حق مساوات کیوں نہیں دیا جارہا ہے جیسا کہ دستور میں ضمانت دی گئی ہے۔

حالیہ دنوں میں دلتوں پر حملوں کے پیش نظر وزیر اعظم کے اس ریمارک پر کہ ’ مجھے مارو لیکن دلتوں کو چھوڑدو ‘ کا حوالہ دیتے ہوئے ایچوری نے کہا کہ محض بیان بازی سے کوئی مقصد حاصل نہیں ہوتا بلکہ وزیر اعظم کو یہ اعلان کرنا ہوگا کہ اگر دلتوں پر حملہ کیا گیا تو قانونی شکنجہ کس دیا جائیگا لیکن وزیر اعظم نے ایسا کوئی تیقن نہیں دیا۔ انہوں نے دلتوں کو بااختیار بنانے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ معاشی طور پر خودکفیل بنانے کیلئے انہیں 5ایکڑ زرعی اراضی فراہم کی جائے اور ہاتھ سے صفائی ( خاکروبی ) کو ختم کردیا جائے۔ گجرات میں قائم دلت اتیا چار لڑائی سمیتی کے لیڈر جگنیش میوائی نے کہا کہ ان کی تنظیم نہ صرف دلتوں کی خودادری کیلئے جدوجہد کرے گی بلکہ روٹی ، کپڑا اور مکان کے نعرہ کو عملی شکل دے گی۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ گجرات میں بی جے پی کی زیر قیادت حکومت نے انتخابی وعدوں کو فراموش کردیا ہے اور ترقی کا ماڈل ایک ڈھکوسلہ ہے اور آئندہ انتخابات میں بی جے پی کے اصل چہرہ کو بے نقاب کردیا جائیگا۔اس موقع پر سی پی آئی جنرل سکریٹری ایس سدھاکر ریڈی، پارٹی کے نیشنل سکریٹری ڈی راجہ پی آر پی، بہوجن مہا سنگھ کے صدر پرکاش امبیڈکر اور حیدرآباد یونیورسٹی کے متوفی طالب علم روہت ویملا کی والدہ رادھیکا نے بھی مخاطب کیا۔

TOPPOPULARRECENT