Wednesday , September 20 2017
Home / ہندوستان / گاؤ رکھشکوں کو بخشا نہ جائے ۔ ریاستوں کو مرکز کی ہدایت

گاؤ رکھشکوں کو بخشا نہ جائے ۔ ریاستوں کو مرکز کی ہدایت

کسی کو بھی قانون اپنے ہاتھ میںلینے کا اختیار نہیں ۔ وزارت داخلہ سے ہدایت کی اجرائی
نئی دہلی 9 اگسٹ ( سیاست ڈاٹ کام ) گاؤ رکھشکوں پر سخت موقف اختیار کرتے ہوئے مرکزی حکومت نے آج رات تمام ریاستوں سے کہا کہ وہ گائے کے تحفظ کے نام پر قانون اپنے ہاتھ میں لینے والے کسی بھی شخص کو بہ بخشیں اور ایسے مجرمین کے خلاف فوری کارروائی کی جائے ۔ وزارت داخلہ نے یہ ہدایت ایسے وقت میں جاری کی ہے جبکہ وزیر اعظم نریندر مودی نے بھی دو دن قبل گاؤ رکھشکوں پر سخت تنقید کی تھی اور عوام سے کہا تھا کہ وہ ایسے فرضی محافظین سے ہوشیار رہیں جو سماج کو تقسیم کرنا چاہتے ہیں ۔ انہوں نے ریاستوں سے کہا تھا کہ وہ ان کے خلاف سخت کارروائی کریں۔ اس ہدایت میں کہا گیا ہے کہ ہندوستانی کلچر اور تاریخ میں گائے کی بہت اہمیت ہے اور خود گاندھی جی نے کہا تھا کہ گائے کا تحفظ ان کیلئے صرف گائے کا تحفظ نہیں بلکہ ایک بے یار و مددگار اور کمزور کی جان بچانے کے برابر ہے ۔ وزارت داخلہ کے حلفنامہ میں کہا گیا ہے کہ اس کا یہ مطلب ہرگز نہیں ہوتا کہ کسی بھی فرد یا افراد کے گروپ کو مبینہ گاؤ کشی کو روکنے اپنے طور پر کارروائی کا اختیار حاصل ہوگیا ہے ۔ ایسے افراد کسی غلط کام کرنے والوں کو سزائیں دینے کے مجاز نہیں ہیں۔ ہدایت نامہ کے مطابق حال میں کچھ ایسے واقعات پیش آئے ہیں جن میں کچھ افراد یا گروپس نے گائے کے تحفظ کے نام پر قانون اپنے ہاتھ میں لیا ہے اور خود جرم کے مرتکب ہوئے ہیں۔ یہ صورتحال قابل قبول نہیں ہے ۔ ایسے میں ریاستوں سے کہا جاتا ہے کہ وہ اس بات کو یقینی بنائیں کہ جو کوئی قانون کو اپنے ہاتھ میں لیتا ہے اس سے فوری اور سختی سے نمٹا جائے اور قرار واقعی سزائیں دی جائیں۔ ایسی حرکتوں کو برداشت نہیں کیا جانا چاہئے اور ان پر کسی استثنی کے بغیر قانون کے مطابق کارروائی ہونی چاہئے ۔ ہدایت نامہ میں کہا گیا ہے کہ کوئی بھی فرد کسی بھی حالات میں قانون کو اپنے ہاتھ میں نہیں لے سکتا اور کوئی بھی فرد یا افراد ایسا کرتے ہیں تو ان سے متعلقہ قوانین کے تحت سختی سے نمٹا جائیگا ۔ ان کے خلاف تیز رفتار انداز میں کارروائی کی جائیگی ۔ وزارت داخلہ نے یہ ہدایت ایسے وقت میں جاری کی ہے جب اس طرح کے واقعات پر مودی حکومت اور بی جے پی کو تنقیدوں کا سامنا ہے ۔

 

مودی گاؤ رکھشکوں پر تنقید کیلئے معذرت کریں ‘ شنکر اچاریہ
متھورا 9 اگسٹ ( سیاست ڈاٹ کام ) گاو رکھشکوں کے خلاف وزیر اعظم نریندر مودی کے ریمارکس پر گوردھن پیٹھ کے شنکر آچاریہ نے شدید اعتراض کیا ہے اور کہا کہ وزیر اعظم کو تین دن میں معذرت خواہی کرنی چاہئے ۔ بصورت دیگر ان کے خلاف قانونی چارہ جوئی کی جائیگی ۔ شنکر اچاریہ ادھوکشجانند سرسوتی نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ مودی کے ریمارکس سے گاؤ رکھشکوں کا وقار متاثر ہوا ہے ۔ یا تو وہ اندرون تین دن سر عام افسوس کا اظہار کریں یا پھر ہم ان کے خلاف ہائیکورٹ یا سپریم کورٹ میںہتک عزت کی درخواست دائر کرینگے ۔ انہوں نے کہا کہ مودی نے گاؤ ‘ گنگا اور گیتا کو فراموش کردیا ہے حالانکہ ان ہی کی وجہ سے انہیں آج ملک کا اقتدار حاصل ہوا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کو چاہئے کہ وہ راجستھان میں سرکاری گئو شالہ میں ہو رہی گایوں کی اموات کو روکنے کیلئے اقدامات کرے۔

TOPPOPULARRECENT