Tuesday , August 22 2017
Home / ہندوستان / گائے ذبح کرنے والوں کو ہلاک کرنے کا ویدوں میں حکم

گائے ذبح کرنے والوں کو ہلاک کرنے کا ویدوں میں حکم

محمد اخلاق کی ہلاکت بلاوجہ نہیں ہوئی، آر ایس ایس ترجمان پنچ جنیہ کا مضمون، ہر عمل کے ردعمل پر نیوٹن تھیوری کا حوالہ
نئی دہلی۔18 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) بیف پار جاری بحث میں مزید شدت پیدا کرتے ہوئے آر ایس ایس کے ترجمان جریدہ نے اپنے سرورق مضمون میں لکھا ہے کہ بیف کے استعمال کی افواہوں پر دادری میں محمد اخلاق کی ہلاکت بے سبب یا بے وجہ نہیں ہوئی ہے و نیز ’’ویدوں میں بھی حکم دیا گیا ہے کہ گائے ذبح کرنے والوں کو ہلاک کردیا جائے‘‘ آر ایس ایس کے ترجمان جریدہ ’’پنچ جنیہ‘‘ کے ایک مضمومن میں لکھا گیا ہے کہ ’’ویدوں میں حکم دیا گیا ہے کہ جو کوئی بھی گائے ذبح کرتا ہے اس کو ہلاک کردیا جائے۔ ہندو طبقہ کے لئے دبیحہ گائو ایک بہت بڑا مسئلہ ہے۔ نیز ہم میں سے کئی افراد کے لئے یہ زندگی اور موت کا سوال ہے۔‘‘ اس مضمون میں ان مصنفین کی بغاوت پر بھی سوال ٹھائے گئے جنہوں نے دادری میں ایک مسلم شخص کو زدوکوب میں ہلاک کئے جانے کے بعد بطور احتجاج اپنے اعزامات واپس کئے ہیں۔‘‘’’آپ (مصنفین) نے اخلاق کے ہاتھوں گائوکشی نہیں دیکھا۔

آپ نے یہ حقیقت بھی نہیں دیکھا کہ کسی بھی ذرائع ابلاغ نے اخلاق کے ساتھ کبھی کسی مقامی شخص کی دشمنی کا کوئی تذکرہ نہیں کیا۔ دادری ایسا گائوں ہے جس نے کبھی فرقہ وارانہ کشیدگی نہیں دیکھا۔ کوئی یہ سمجھ سکتا ہے کہ اخلاق کی موت بلاوجہ اور بے سبب ہی ہوگئی لیکن ہمارے پاس نیوٹن کا ضابطہ بھی ہے جس کے مطابق ہر عمل مساویانہ طور پر مخالفانہ ردعمل کو دعوت دیتا ہے۔‘‘ مضمون میں مزید لکھا گیا ہے کہ ’’ایک ایسے گائوں میں جہاں ہمیشہ امن رہا ہے یہ واقعہ (اخلاق کی ہلاکت) پیش آیا جو بلاوجہ نہیں ہوسکتا۔‘‘ مضمون میں دعوی کیا گیا ہے کہ موجودہ دور کے مسلمان چند پشتوں پہلے ہندو تھے۔ وہ کون ہے جس نے (ہندو) مذہب تبدیل کرنے والے ان ہندوستانیوں (مسلمانوں) کو خود اپنی ہی تہذیب اور اقدار پر تھوکنا سکھایا ہے؟ بلا شبہ بشمول اخلاق تمام ہندوستانی مسلمان اپنی چند پشتوں پہلے تک بھی ہندو تھے۔ اخلاق کے آباء و اجداد گائے کے محافظ تھے

جنہوں نے گایوں کو ہلاک کرنے والوں کو دیگر کئی جرأتمند افراد کی طرح سزاء دی تھی۔‘‘ مضمون میں مزید لکھا گیا ہے کہ ’’مذہب تبدیل کرنے والے یہ افراد اس قدر متنفر کیسے ہوگئے کہ وہ گائے کے محافظ سے گائے کو ہلاک کرنے والے بن گئے۔‘‘ ہندوستان مسلم قیادت اور مدرسوں نے مسلمانوں کو اپنی روایات سے نفرت کا درس دیا ہے۔ غالباً ان ہی حرکات کی وجہ گائو کشی کے نام پر اخلاق کی ہلاکت ہوئی ہے حالانکہ تحقیقات کے نتائج ہنوز منظر عام پر نہیں آئے ہیں۔ دادری ہلاکت آر ایس ایس کے ترجمان جریدہ کی جانب سے حق بجانب قرار دیئے جانے پر اٹھنے والے سیاسی طوفان کے درمیان پنچ جنیہ کے ایڈیٹر ہتیش شنکر نے کہا اس متنازعہ مضمون سے بے تعلق اختیار کی ہے اور کہا کہ اس مضمون میں ظاہر کردہ نظریات شخصی ہیں جس کا ادارہ سے کوئی تعلق نہیں ہے۔ اہم کسی بھی پر تشدد واقعہ کی تائید نہیں کرتے۔‘‘

TOPPOPULARRECENT