Tuesday , September 26 2017
Home / جرائم و حادثات / گاندھی ہاسپٹل میں ڈاکٹروں کی لاپرواہی سے خاتون فوت

گاندھی ہاسپٹل میں ڈاکٹروں کی لاپرواہی سے خاتون فوت

بروقت وینٹیلیٹر فراہم نہ کرنے پر رشتہ داروں کی شکایت و احتجاج
حیدرآباد ۔ /13 جون (سیاست نیوز) گاندھی ہاسپٹل کے ڈاکٹرس کی مبینہ لاپرواہی سے ایک خاتون فوت ہوگئی ۔ بتایا جاتا ہے کہ صنعت نگر علاقہ کی ساکن خاتون اسماء فاطمہ کو بروقت وینٹیلیٹر فراہم نہیں کیا گیا جس کے سبب اس خاتون کی موت ہوگئی ۔ اسماء فاطمہ کی موت پر ڈاکٹروں کو ذمہ دار ٹھہراتے ہوئے ان کے افراد خاندان نے زبردست احتجاج کیا اور خاطی ڈاکٹروں اور عملہ کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا ۔ برہم افراد خاندان اور مریضوں کے رشتہ داروں نے یہ تاثر پیش کیا کہ آیا ڈاکٹر کے تحفظ کے لئے حکومت نے ہاسپٹل میں پولیس کے آؤٹ پوسٹ کو قائم کیا لیکن مریضوں کی رہنمائی اور سہولیات اور تحفظ کے اقدامات نہیں ہیں ۔ عثمانیہ ، گاندھی اور نیلوفر جیسے بڑے ہاسپٹلوں کے انتظامیہ اور ڈاکٹروں کی من مانی کے سبب حکومت تلنگانہ کا وقار بھی متاثر ہورہا ہے ۔ سرکاری دواخانوں میں معیاری سہولیات اور جدید آلات کے ذریعہ غریب عوام کو کارپوریٹر طرز کی سہولیات کے دعویٰ کھوکھلے اور بے بنیاد ثابت ہورہے ہیں ۔ جبکہ ریاست کے معروف سرکاری ہاسپٹل میں سے ایک گاندھی ہاسپٹل میں وینٹیلیٹر کا کوئی موثر نظام نہیں یا پھر ڈاکٹرس اس کے استعمال میں لاپرواہی کا مظاہرہ کررہے ہیں ۔ حکومت کو چاہئیے کہ وہ ایسے واقعات کے تدارک کے لئے موثر اقدامات کرتے ہوئے سرکاری وقار اور سہولیات کو متاثر ہونے سے بچائے اور لاپرواہ ڈاکٹروں کے خلاف سخت اقدامات کرے ۔ باوثوق ذرائع کے مطابق صنعت نگر ایس ، آر ٹی کالونی کے ساکن محمد نصیرالدین کی بیوی اسماء فاطمہ کو شوگر کی مقدار میں اضافہ پر فوری ہاسپٹل سے رجوع کیا گیا ۔ رات 8 بجے جب اس خاتون کو ہاسپٹل سے رجوع کیا گیا ان کے رشتہ داروں کے مطابق ڈاکٹروں کی لاپرواہی اور علاج میں مبینہ تاخیر کے سبب خاتون اس وقت تک کوما میں چلی گئی تھیں ۔ تاہم جس کے بعد وینٹیلیٹر نہ ہونے کے سبب اس خاتون کی موت ہوگئی ۔

TOPPOPULARRECENT