Tuesday , May 30 2017
Home / ہندوستان / گجرات اسمبلی میں ہنگامے کی وجہ سے تمام کانگریس اراکین معطل

گجرات اسمبلی میں ہنگامے کی وجہ سے تمام کانگریس اراکین معطل

گاندھی نگر، 20 فروری (سیاست ڈاٹ کام) گجرات اسمبلی کا بجٹ اجلاس آج سے شروع ہوگیااور اندیشہ کے مطابق اہم اپوزیشن پارٹی کانگریس نے اس دوران زبردست ہنگامہ کیا جس کی وجہ سے گورنر او پی کوہلی کو محض چھ منٹ میں ہی اپنے خطاب کی خانہ پوری مکمل کرنی پڑی جبکہ مسلسل ہنگامہ جاری رہنے کے سبب اسمبلی کے اسپیکر رمن لال ووہرا نے تمام کانگریس ممبران اسمبلی کو دن بھر کے لئے ایوان سے معطل کر دیا۔ نائب وزیر اعلی اور وزیر خزانہ نتن پٹیل کل یعنی 21 فروری کو بجٹ پیش کریں گے ۔ ادھر نلیا عصمت دری معاملہ جس میں مبینہ طورپر کہا جارہا ہے کہ اس میں بی جے پی کے کچھ مقامی لیڈر ملوث تھے ، پر کانگریس کی دو دن پہلے نلیا سے شروع ہوئی ریلی آج صبح گاندھی نگر پہنچ گئی اور یہاں ستیہ گرہ چھاؤنی میدان میں جلسہ کے بعد پہلے سے اعلان شدہ پروگرام کے تحت اسمبلی کا گھیراؤ کرنے جا رہے پارٹی کے ریاستی صدر بھرت سنگھ سولنکی اور سابق صدر سدھارتھ پٹیل سمیت دو سو سے زیادہ پارٹی لیڈروں و کارکنوں کو پولیس نے حراست میں لے لیا۔ پارلیمانی امور کے وزیر مملکت پردیپ سنگھ جاڈیجا نے اس جلسہ کو ناکام قرار دیتے ہوئے کہا کہ پارٹی کے دس ہزار کے سابقہ دعوے کے الٹا جلسہ کے مقام پر ایک ہزار سے بھی کم لوگ پہنچے تھے ۔ انہوں نے نلیا عصمت دری معاملہ پر کانگریس پر اسمبلی کے اندر اور باہر شرمناک اور گجرات کو بدنام کرنے والا سلوک کرنے کا الزام لگاتے ہوئے کہا کہ وزیر اعلی وجے روپانی کی قیادت میں بی جے پی حکومت اس کے ملزمین کے خلاف اور گجرات کی کسی بھی بیٹی کی عزت پر ہاتھ ڈالنے والوں کے خلاف سخت سے سخت کارروائی کے لئے پرعزم ہے ۔ ادھر کانگریس ریاستی صدر مسٹر سولنکی نے مذکورہ جلسہ میں ریاست کی بی جے پی حکومت پر زبردست حملہ کیا۔ بعد میں کانگریس ممبران اسمبلی کی ایوان سے معطلی کوایوان میں حزب اختلاف کے لیڈر شنکرسنگھ واگھیلا نے اسے افسوسناک قرار دیا ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT