Friday , September 22 2017
Home / سیاسیات / گجرات انتخابات میں فائدہ اٹھانے ’ انتخابی بلیٹ ٹرین ‘ :کا نگریس

گجرات انتخابات میں فائدہ اٹھانے ’ انتخابی بلیٹ ٹرین ‘ :کا نگریس

نئی دہلی 14 ستمبر ( سیاست ڈاٹ کام ) کانگریس نے آج احمد آباد ۔ ممبئی تیز رفتار بلیٹ ٹرین کو انتخآبی بلٹ ٹرین قرار دیا ہے اور کہا کہ اس کے آغاز کا وقت گجرات اسمبلی کے مجوزہ انتخابات کو پیش نظر رکھتے ہوئے طئے کیا گیا تھا ۔ کانگریس نے کہا کہ بلیٹ ٹرین کے کاموں کا سنگ بنیاد رکھنا در اصل مودی حکومت کی جانب سے ہر ریاستی اسمبلی کے انتخاب سے قبل کئے جانے والے بڑے پراجیکٹس اور پیاکیجس کے اعلان کے مطابق ہی ہے ۔ پارٹی نے مودی حکومت پر الزام عائد کیا کہ اس نے مسافرین کی حفاظت کے تعلق سے اپنی ذمہ داری سے مکمل صرف نظر کیا ہے جبکہ وہ صرف اسی ایک پراجیکٹ پر توجہ مرکوز کر رہی ہے ۔ سینئر کانگریس لیڈر ملکارجن کھرگے نے وزیر اعظم نریندر مودی پر الزام عائد کیا کہ انہوں نے سابقہ یو پی اے حکومت کی جانب سے پیش کردہ تجویز کے اس پراجیکٹ کو تاخیر کا شکار کیا تھا ۔ انہوں نے ساڑھے تین سال کی تاخیر کی جس کی وجہ سے اس پراجیکٹ کی لاگت میں اضافہ ہوگا ۔ کانگریس ترجمان آر پی این سنگھ نے الزام عائد کیا کہ بی جے پی حکومت ریلوے سیفٹی کو نظر انداز کر رہی ہے جبکہ مودی حکومت کے اقتدار سنبھالنے کے بعد سے اب تک 29 بڑے ریل حادثے ہوچکے ہیں جن میں 259 افراد ہلاک اور 973 زخمی ہوچکے ہیں۔ نریندر مودی اور ان کے جاپانی ہم منصب شینزو ابے نے ہندوستان کے پہلے بلیٹ ٹرین پراجیکٹ کا آج سنگ بنیاد رکھا تھا ۔ یہ ٹرین احمد آباد اور ممبئی کے مابین چلائی جائیگی ۔ اس پراجیکٹ کی جملہ لاگت 1.10 لاکھ کروڑ روپئے ہوگی اور اس ٹرین سے دونوں شہروں کے مابین سات گھنٹوں کا سفر تین گھنٹوں سے بھی کم وقت کا ہوجائیگا ۔

ملکارجن کھرگے نے اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ یہ ایک اور تشویش کی بات ہے کہ وزیر اعظم نے ایک بار پھر یو پی اے حکومت کے پراجیکٹ کو اختیار کیا ہے ۔ اس پراجیکٹ کو سنگ بنیاد کے مرحلے تک لانے انہیں ساڑھے تین سال کا وقت درکار ہوا ہے ۔ اس صرف گجرات اسمبلی انتخابات کے وقت سے ملانے کی کوشش کی گئی ہے جو جاریہ سال کے اواخر میں ہونے والے ہیں۔ انہوں نے کہا یہ پراجیکٹ ’ انتخابی بلیٹ ٹرین ‘ کے سوا کچھ بھی نہیں ہے ۔ انہوں نے کہا کہ عوام کو ایک بار بیوقوف بنادیا گیا ہے اور ملک کے عوام بہت سمجھدار ہیں اور وہ مودی حکومت کی جانب سے کئے جانے والے جھوٹے وعدوں سے بار بار وبیوقوف نہیں بنیں گے ۔ مودی نے عوام سے کئی تقاریر کیں اور وعدے کئے جنہیں بعد میں فراموش کردیا گیا ۔ انہوں نے کہا کہ انہوں نے وارناسی کو کیوٹو ( جاپانی شہر ) میں تبدیل کرنے کا وعدہ کیا تھا لیکن اسے فراموش کردیا گیا حالانکہ وزیر اعظم لوک سبھا میں وارناسی کی ہی نمائندگی کرتے ہیں۔ مسٹر کھرگے نے کہا کہ ہم نے ساڑھے تین سال دیکھے ہیں کہ کس طرح وزیر اعظم نے اسی نوعیت کے بڑے پراجیکٹ کو استعمال کرتے ہوئے انتخابات سے قبل اعلان کیا ہے تاکہ انتخابات میں اس کا فائدہ حاصل کیا جاسکے ۔ سابق وزیر ریلوے نے کہا کہ یہ انتہائی تکلیف کی بات ہے کہ مودی حکومت صرف اسی پراجیکٹ پر توجہ مرکوز کر رہی ہے اور اس پر 1.10 لاکھ کروڑ روپئے خرچ کئے جا رہے ہیں جبکہ اس نے روز آنہ ٹرین میں سفر کرنے والے کروڑوں مسافرین کے تحفظ کی بنیادی ذمہ داری سے صرف نظر کرلیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی نے ریل بجٹ کو ختم کرکے روایات کو بھی ختم کردیا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT